حیدر پورہ انکاؤنٹر معاملہ: مجسٹریل انکوائری کے احکامات صادر

منوج سنہا نے کہا کہ حیدر پورہ انکاؤنٹر میں ایک ایڈیشنل ضلع مجسٹریٹ کے عہدے والے افسر کی سربراہی میں انکوائری کا حکم دیا گیا ہے۔ حکومت مقررہ وقت میں رپورٹ جمع ہونے کے ساتھ ہی مناسب کارروائی کرے گی۔

حیدر پورہ انکاؤنٹر میں مارے گئے لوگوں کے لواحقین احتجاج کرتے ہوئے، تصویر یو این آئی
حیدر پورہ انکاؤنٹر میں مارے گئے لوگوں کے لواحقین احتجاج کرتے ہوئے، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

سری نگر: جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے حیدر پورہ انکاؤنٹر کی مجسٹریل انکوائری کرنے کے احکامات صدر کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت مقرہ وقت میں رپورٹ جمع ہوتے ہی اس سلسلے میں مناسب کارروائی کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ جموں وکشمیر انتظامیہ عام شہریوں کی زندگیوں کے تحفظ اور انصاف فراہم کرنے کے لئے پرعزم ہے۔ موصوف لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے یہ باتیں جمعرات کے روز اپنے ایک ٹوئٹ میں کیں۔

حیدر پورہ انکاؤنٹر میں مارے گئے لوگوں کے لواحقین احتجاج کرتے ہوئے، تصویر یو این آئی
حیدر پورہ انکاؤنٹر میں مارے گئے لوگوں کے لواحقین احتجاج کرتے ہوئے، تصویر یو این آئی

ان کا ٹوئٹ میں کہنا تھا کہ ’حیدر پورہ انکاؤنٹر میں ایک ایڈیشنل ضلع مجسٹریٹ کے عہدے والے افسر کی سربراہی میں مجسٹریل انکوائری کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ حکومت مقررہ وقت میں رپورٹ جمع ہونے کے ساتھ ہی مناسب کارروائی کرے گی‘۔ انہوں نے ٹوئٹ میں مزید کہا کہ ’جموں و کشمیر انتظامیہ عام شہریوں کی زندگیوں کے تحفظ کے عزم کا اعادہ کرتی ہے اور انصاف کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے گا‘۔


بتا دیں کہ حیدر پورہ انکاؤنٹر میں ہلاک ہونے والوں میں مکان مالک الطاف احمد اور کرایہ دار مدثر گل بھی شامل ہیں۔ مہلوکین کے اہلخانہ لاشوں کی واپسی کے مطالبے کو لے کر سراپا احتجاج ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ دونوں بے گناہ ہیں اور ان کا ملی ٹنسی سے کوئی واسطہ نہیں تھا۔

پولیس کے مطابق مکان مالک کی موت کراس فائرنگ کے دوران واقع ہوئی جبکہ مدثر گل ایک ملی ٹںت اعانت کار تھا۔ جموں وکشمیر کی سیاسی جماعتوں بشمول نیشنل کانفرنس، پی ڈی پی، پیپلز کانفرنس، جموں وکمشیر اپنی پارٹی، سی پی آئی (ایم) نے اس واقعے میں تحقیقات کرانے کا مطالبہ کیا ہے اور لواحقین کو لاشیں واپس دینے کی حمایت کی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔