گیانواپی مسجد تنازع پر عدالت میں آج دوبارہ سنوائی، ہندو فریق کا چینل گیٹ کھلوانے کا اصرار

گیانواپی مسجد تنازع پر الہ آباد ہائی کورٹ میں آج سنوائی جاری رہے گی، جس میں اس بات پر بحث ہوگی کہ سروے کرنے والے کمشنر کو تبدیل کیا جائے یا نہیں

گیانواپی مسجد تنازع
گیانواپی مسجد تنازع
user

قومی آوازبیورو

وارانسی میں گیانواپی مسجد پر ہنگامہ جاری ہے اور الہ آباد ہائی کورٹ میں اس معاملہ کی سنوائی آج بھی جاری رہے گی اور اس پر سب کی نظریں لگی ہوئی ہیں۔ گیانواپی مسجد میں سروے کے سلسلے میں کورٹ کمشنر پر سوال اٹھانے والی عرضی پر آج دوبارہ سماعت ہوگی۔ وارانسی کی ضلع عدالت میں ایک بار پھر آج دوپہر 2 بجے اس معاملے کی سماعت ہونے جا رہی ہے۔ اس سماعت میں کمشنر کو تبدیل کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کیا جا ئے گا۔ مسلم فریق نے کورٹ کمشنر پر جانبداری کا الزام لگایا ہے۔

دوسری طرف گیانواپی مسجد سے متعلق دو معاملات کی سماعت بھی آج الہ آباد ہائی کورٹ میں ہونے والی ہے۔ 8 اپریل کو وارانسی کی عدالت نے ASI کو گیانواپی کمپلیکس کی کھدائی کا حکم دیا تھا، جس پر ہائی کورٹ نے روک لگا دی تھی۔ مسلم فریقین کی اسی عرضی پر آج دوبارہ سماعت ہونی ہے۔


اے بی پی نیوز پورٹل پر شائع خبر کے مطابق مرکزی وزیر سنجیو بالیان کا کہنا ہے کہ گیانواپی مسجد کی حقیقت سامنے آنی چاہیے۔ فی الحال گیانواپی مسجد کے سروے کا کام تعطل کا شکار ہے۔ اب عدالت کا جو بھی فیصلہ آئے گا، اس کے بعد ہی آگے کی کارروائی ہوگی۔

دوسری جانب خبر ہے کہ غیر مسلم فریق نے چینل گیٹ کا تالا کھلوانے کے لئے ایک عرضی داخل کی ہے اور اس پر بھی آج سنوائی ممکن ہے۔ واضح رہے سی آر پی ایف نے مسجد کے چاروں طرف لوہے کی بیریکیڈنگ کی ہوئی ہے اور اس میں ایک چینل گیٹ لگا ہوا ہے جس پر تالا لگا ہے تاکہ کوئی اندر نہ جا سکے۔ غیر مسلم حضرات مسجد میں داخلہ کے لئے یہ چینل گیٹ کھلوانا چاہتے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔