کورونا بحران: تیسری لہر سے قبل آکسیجن کا اسٹاک تیار کیا جائے، سپریم کورٹ کی مرکز کو ہدایت

سپریم کورٹ نے کہا، ’’تیسری لہر میں بچے بھی انفیکشن سے متاثر ہو سکتے ہیں، اس صورتحال میں حکومت کیا کرے گی؟ بچوں کو ٹیکہ دہنے کے انتظام یقینی بنایا جائے‘‘

فائل تصویر آئی اے این ایس 
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے جمعرات کو مرکزی حکومت کو مشورہ دیا ہے کہ وہ ملک میں کورونا وبا کی تیسری لہر کے امکانات کے پیش نظر ابھی سے تیاریاں شروع کر دی جائیں۔

جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ کی سربراہی میں بنچ نے آکسیجن کی فراہمی سے متعلق سماعت کے دوران کہا کہ لوگوں میں آکسیجن کی کمی پر گھبرانا نہیں چاہئے ، یہ ضروری ہے کہ تیسری لہر آنے سے پہلے آکسیجن کا بفر اسٹاک بنایاجائے۔


تیسری لہر کے امکان پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے جسٹس چندرچوڑ نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ تیسری لہر کے طور پر کورونا کی ہولناک صورتحال سے نمٹنے کے لئے ملکی سطح پر کوئی لائحہ عمل مرتب کرے۔ عدالت نے کہا کہ "تیسری لہر سے نمٹنے کے لئے آج ہی تیاریاں شروع کردیں۔" اس وقت بچے بھی انفکشن سے متاثر ہوسکتے ہیں ، اس صورتحال میں آپ کیا کریں گے؟ بچوں کو ٹیکہ دہنے کے انتظام یقینی بنایا جائے۔ "

تیسری لہر سے نمٹنے کے لئے عدالت نے بنیادی ڈھانچے کو بہتر بنانے کے ساتھ قومی داخلہ اہلیت ٹیسٹ (این ای ای ٹی) کی تیاری کرنے والے طلباء اور نرسوں کو لگانے کا بھی مشورہ دیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 07 May 2021, 5:11 AM