سرکاری اور نجی دفتر آج سے کھلیں گے: کیجریوال

پہلے تین ہزار کروڑ ماہ کا محصول آتا تھا اور یہ گھٹ کر 300 کروڑ رہ گیا جس سے حکومت کے سامنے ضروری خدمات کے لئے بھی وسائل دینا مشکل ہوتا جا رہا ہے۔

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا
user

یو این آئی

دہلی کے وزیراعلی اروند کیجریوال نے کہا ہے کہ دارالحکومت میں مرکزی حکومت کی ہدایات کے مطابق ہی لاک ڈاؤن میں راحت دی جائے گی اور سرکاری اور نجی دفتر پیر سے یعنی آج سے کھلیں گے۔

کیجریوال نے گزشتہ روز اتوار کو کہا کہ مرکزی حکومت سے اپیل کی جائے گی کہ دارالحکومت میں جو 97 ممنوع علاقے ہیں صرف انہی کو ریڈ زون میں رکھا جائے اور دیگر کو کھولنے کی اجازت دی جائے۔انہوں نے لاک ڈاؤن کے دوران حکومت کو ٹیکس وصولی میں آئی بڑی کمی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پہلے تین ہزار کروڑ ماہ کا محصول آتا تھا جو کہ گھٹ کر 300 کروڑ رہ گیا جس سے حکومت کے سامنے ضروری خدمات کے لئے بھی وسائل مہیا کرانا مشکل ہوتا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ دہلی کے سبھی گیارہ ضلع ریڈ زون میں ہیں۔ کیجریوال نے کہا ہے کہ کورونا بحران ختم نہیں ہونے جا رہا ہے اور اس کے درمیان ہمیں جینے کے لئے تیار ہونا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا سے نمٹنے کے لئے طبی خدمات کے مناسب انتظام کیے گئے ہیں۔ انہوں نے مانا کہ لاک ڈاؤن نہیں ہوتا تو حالات بےحد خطرناک ہوتے لیکن اب اس کے ساتھ جینے کا جذبہ لانا ہوگا۔

حکومت کے فیصلے کے مطابق پیر سے ضروری خدمات والے سرکاری دفتر پوری طرح کھلیں گے جبکہ غیر ضروری دفتروں میں ڈپٹی سکریٹری سطح سے اوپر کے افسر ہی آئیں گے۔ نجی دفتروں میں 33 فیصد ملازمین کی اجازت ہوگی۔

دہلی میں اسپا، سیلون اور جم نہیں کھلیں گے۔ اسکول کالج اور تعلیمی ادارے بھی بند رہیں گے۔ شام سات بجے سے صبح سات بجے تک گھرسے نکلنے پر روک رہے گی۔ عوامی مقامت پر تھوکنے پر پابندی رہے گی۔ بین ریاستی بس سروس بند رہیں گی۔ بچوں اور حاملہ خواتین کے علاوہ 65 سال سے اوپر کی عمر والے بزرگوں سےگھر سے نہ نکلنے کی اپیل کی گئی ہے۔ کیجروال نے کہا کہ سماجی اور سیاسی پروگرام پوری طرح منسوخ رہیں گے۔ مالی اور زرعی شعبہ سے جڑی سبھی کمپنیاں کھلیں گی۔

دہلی میں لاک ڈاؤن کا تیسرا مرحلہ پیر سےشروع ہوگا جو 17مئی تک چلے گا۔ وزیراعلی نے کہا،’’ہم نے مرکزی حکومت کو مشورہ دیا ہے کہ کنٹینمنٹ زون کو چھوڑ کر باقی دہلی کو گرین زون میں کر دیا جائے، تاکہ دہلی کی معیشت کو پھر سے شروع کیا جاسکے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ دہلی حکومت کے اس وقت دو ہی مقصد ہیں۔ ایک تو کورونا سے ہونے والی اموات کو کم کرنا اور دوسرا زیادہ سے زیادہ جانچ کر کے کورونا مریضوں کی پہچان کرنا۔

کیجریوال نے کہا، ’’میرا خیال ہے کہ لاک ڈاؤن کے دوران اس وقت کا ہمیں کورونا کے خلاف لڑائی میں استعمال کرنا چاہیے تھا جس کا ہم نے بخوبی فائدہ اٹھایا۔ ہم نے مناسب انتظامات کرلئے ہیں، اسپتال تیار کرلئے ہیں۔‘‘ انہون ںے کہا کہ دہلی میں فارما کمپنیز اور دیگر ضروری سامان بنانے والی ساری مینوفیکچرنگ یونٹس کھلی رہیں گی۔ پیکیجنگ مٹیرئل کی یونٹس بھی کھلی رہیں گی۔ ای کامرس ایکٹیوٹی میں صرف ضرورت کے سامان کی اجازت ہوگی۔

واضح رہے کہ دارالحکومت میں ہفتے کو کورونا انفیکشن کے 384 نئے معاملے سامنے آئے تھے اور کُل متاثرین کی تعداد 4122 ہے۔ ملک میں کورونا وائرس کے لحاظ سے تیسرے مقام پر دہلی میں 64 افراد کی موت ہوچکی ہے جبکہ 1256 لوگ ٹھیک ہوئے ہیں۔

Published: 4 May 2020, 5:45 AM