کشمیر میں تازہ برف باری، بانڈی پورہ - گریز روڈ بند

وادی کشمیر کے بعض بالائی علاقوں میں تازہ برف باری اور مطلع ابر آلود رہنے سے شبانہ درجہ حرارت میں قدرے بہتری واقع ہوئی ہے

تصویر بشکریہ ٹوئٹر / @shivjknews
تصویر بشکریہ ٹوئٹر / @shivjknews
user

یو این آئی

سری نگر: وادی کشمیر کے بعض بالائی علاقوں میں تازہ برف باری اور مطلع ابر آلود رہنے سے شبانہ درجہ حرارت میں قدرے بہتری واقع ہوئی ہے۔ محکمہ موسمیات کے ایک ترجمان کی پیش گوئی کے مطابق وادی میں اگلے چوبیس گھنٹوں کے دوران کہیں کہیں ہلکی سے درمیانی درجے کی بارشیں متوقع ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ وادی میں 5 نومبر کی شام تک موسم خراب رہ سکتا ہے تاہم اس کے بعد 11 نومبر تک موسم مجموعی طور پر خشک رہنے کا امکان ہے۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق گلمرگ، کپوارہ، مژھل وغیرہ جیسے علاقوں میں جمعےکے روز تازہ برف باری ہوئی۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ گریز وادی میں قریب سات سینٹی میٹر برف جمع ہوئی ہے جس کے باعث حکام نے بانڈی پورہ- گریز روڈ کو ٹریفک کی نقل وحمل کے لئے بند کر دیا ہے۔ متعلقہ حکام کا کہنا ہے کہ اس روڈ کو عارضی طور پر ٹریفک کی نقل و حمل کے لئے بند کر دیا گیا تاہم موسم میں بہتری واقع ہونے کے ساتھ ہی اس کو بحال کیا جا سکتا ہے۔


محکمہ موسمیات کے ایک ترجمان نے بتایا کہ وادی میں بالائی علاقوں میں تازہ برف باری اور مطلع ابر آلود رہنے سے شبانہ درجہ حررات میں قدرے بہتری واقع ہوئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سری نگر میں کم سے کم درجہ حرارت 5.6 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جہاں گذشتہ شب کا کم سے کم درجہ حرارت 1.8 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا تھا۔

وادی کے مشہور زمانہ سیاحتی مقام گلمرگ میں کم سے کم درجہ حرارت 1.0 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جہاں گذشتہ شب کا کم سے کم درجہ حرارت منفی 2.5 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا تھا۔ وادی کے دوسرے مشہور سیاحتی مقام پہلگام میں کم سے کم درجہ حرارت 2.2 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جہاں گذشتہ شب کا کم سے کم درجہ حرارت منفی 2.8 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا تھا۔


سرحدی ضلع کپوارہ میں کم سے کم درجہ حرارت 6.7 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جہاں گذشتہ شب کا کم سےکم درجہ حرارت 0.7 ڈگری سینٹی گری ڈریکارڈ ہوا تھا۔ گیٹ وے آف کشمیر کے نام سے جانے والے قصبہ قاضی گنڈ میں کم سے کم درجہ حرارت 3.2 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جہاں گذشتہ شب کا کم سے کم درجہ حرارت 0.6 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا تھا۔ دریں اثنا وادی کے میدانی علاقوں میں جمعےکے روز موسم ابر آلو رہا اور سردی سے بچنے کے لئے دفاتر اور دکانوں پر گرمی کے لئے گرمی کے الیکٹرانک آلات جیسے ہیٹروں کو استعمال کرتے ہوئے دیکھا گیا۔

لوگوں کو بازاروں میں گرم لباس خاص طور پر روایتی لباس ’پھیرن‘ میں ملبوس دیکھا گیا۔ بتادیں کہ وادی میں ماہ گذشتہ کی 23 اور 24 تاریخ کو ہونے والی برف باری اور بارشوں سے سرما سے پہلے ہی سرما جیسی سردی محسوس کی جا رہی ہے جس کا مقابلہ کرنے کے لئے لوگوں نے قبل از وقت ہی روایتی لباس ’پھیرن‘ اور کانگڑی کا استعمال کرنا شروع کر دیا تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔