کورونا کے معاملوں میں اضافہ کا رجحان ، 48 اضلاع میں احتیاط برتنے کی ضرورت:مرکز

مرکز نے کہا کہ 48 اضلاع میں کوویڈ انفیکشن کی شرح 10 فیصد سے اوپربرقرارہے۔ ان اضلاع میں خصوصی احتیاط کی ضرورت ہے۔

فائل تصویر یو این آئی
فائل تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

ہندوستان میں کورونا کے تازہ معاملوں میں اضافہ کا رجحان نظر آ رہاہے ۔ دو دن پہلے بیس ہزار سے کم تازوہ معاملوں کے بعد پرسوں 23 ہزار اور کل 27 ہزار نئے معاملے رپورٹ ہوئے ہیں جو ایک تشویش کا پہلو ہے۔ اب مرکزی حکومت نے بھی کووڈ انفیکشن کی صورتحال کے بارے میں تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کے 48 اضلاع میں خصوصی احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ضرورت ہے ۔

وزارت صحت اور خاندانی بہبود کے سکریٹری راجیش بھوشن نے ایک باقاعدہ پریس کانفرنس میں بتایا کہ ملک میں انفیکشن کی شرح کم تو ہو رہی ہے لیکن تشویش برقرار ہے ۔ پچھلے چند ہفتوں سے اس میں کمی آرہی ہے۔ تاہم ، ملک بھر میں روزانہ 15 سے 16 لاکھ کوویڈ ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں۔


انہوں نے کہا کہ ملک میں کل کووڈ انفیکشن کے معاملات میں 52 فیصد کیرالہ سے ہیں۔ اس درمیان ایک اور عہدیدار نے بتایا کہ پچھلے ہفتے میں 60 فیصد کووڈ سے متاثرہ لوگ کیرالہ سے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صورتحال کنٹرول میں ہے۔

مسٹربھوشن نے کہا کہ 48 اضلاع میں کوویڈ انفیکشن کی شرح 10 فیصد سے اوپربرقرارہے۔ ان اضلاع میں خصوصی احتیاط کی ضرورت ہے۔


انہوں نے کہا کہ کیرالہ، مہاراشٹر ، تمل ناڈو، کرناٹک ، آندھرا پردیش اور میزورم میں کووڈ انفیکشن کے سب سے زیادہ معاملات سامنے آئے ہیں۔ ان ریاستوں میں تہواروں کے موسم میں خصوصی احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں۔ ان کاکہنا تھاکہ چھ ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں 100 فیصد ویکسینیشن ہوچکا ہے۔ ان میں سکم، گوا اور چنڈی گڑھ شامل ہیں۔

مسٹر بھوشن نے بتایا کہ کل ویکسینیشن میں سے 35 فیصد ویکسین شہری علاقوں میں اور باقی دیہی علاقوں میں دی گئی ہیں۔ اسی طرح 52 فیصد ویکسین مردوں کو اور باقی خواتین کو دی گئی ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ بچوں اور 18 سال سے کم عمر افراد کے لیے زائڈس کے ٹیکے کی قیمت کے حوالے سے بات چیت جاری ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔