سابق آئی اے ایس آفیسر جواہر سرکار کو ترنمول کانگریس نے راجیہ سبھا کے لئے کیا نامزد

ترنمول کانگریس نے اپنے سرکاری ٹوئٹر سے ٹوئٹ کرتے ہوئے یہ اطلاع دی ہے کہ ’’ہمیں یہ اطلاع دے کر خوشی ہو رہی ہے کہ پارٹی نے راجیہ سبھا کے لئے سابق آئی اے ایس آفیسر جواہر کو نامزد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

جواہر سرکار، تصویر آئی اے این ایس
جواہر سرکار، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

کلکتہ: قیاس آرائیوں کے برخلاف ترنمول کانگریس نے سابق آئی اے ایس آفیسر اور پرساربھارتی کے سابق سربراہ جواہر سرکار کو راجیہ سبھا کے لئے نامزد کیا ہے۔ ترنمول کانگریس نے اپنے سرکاری ٹوئٹر سے ٹوئٹ کرتے ہوئے یہ اطلاع دی ہے کہ ’’ہمیں یہ اطلاع دے کر خوشی ہو رہی ہے کہ پارٹی نے راجیہ سبھا کے لئے سابق آئی اے ایس آفیسر جواہر کو نامزد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ جواہر سرکار نے تقریباً 42 سال عوامی خدمت میں گزارے ہیں اور پرسار بھارتی کے سابق سی ای او بھی رہے ہیں۔ ان کی خدمات کے پیش نظر ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے۔ ہمیں امید ہے کہ وہ یہاں بھی بہترین خدمات کا مظاہرہ کریں گے۔

خیال رہے کہ سابق چیف سکریٹری الاپن بنرجی کے تبادلے کو لے کر مرکز اور ریاست کے درمیان جاری تنازع میں جواہر سرکار نے کھل کر ممتا حکومت کی حمایت کرتے ہوئے کہا تھا کہ مرکزی حکومت کے اقدمات غیر قانونی ہیں اور ان کا تبادلہ غیر آئینی اور مرکز کے ذریعہ اختیارات کا بے جا استعمال ہے۔ وہ مختلف ایشوز پر ممتا بنرجی کے موقف کی حمایت کرتے رہے ہیں۔


اسمبلی انتخابات کے وقت ترنمول کانگریس میں شامل ہونے والے سابق مرکزی وزیر خزانہ یشونت سنہا سے متعلق قیاس آرائی کی جا رہی تھی کہ پارٹی انہیں راجیہ سبھا بھیج سکتی ہے۔ بعض حلقے مکل رائے کا بھی نام لے رہے تھے۔ مکل رائے بی جے پی چھوڑ کر ترنمول کانگریس میں شامل ہوچکے ہیں۔ بی جے پی ان کے خلاف دل بدل قانون کے تحت کارروائی کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ خطرہ ہے کہ کہیں اسمبلی کی رکنیت منسوخ نہ ہو جائے۔ مگر ترنمول کانگریس نے جواہر سرکار کے نام کا اعلان کرکے سب کو چونکا دیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔