کورونا کی دوسری لہر کے بعد معیشت ٹریک پر آ رہی ہے: سیتارمن

کاروبار میں آسانی سے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ریاستوں نے اس رفتار سے کام نہیں کیا جس رفتار کے ساتھ مرکزی حکومت نے اس سمت میں کام کیا ہے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

وزیر خزانہ نرملا سیتارمن نے کہا کہ ہندوستان کی معیشت کورونا وائرس کی دوسری لہر کے بعد پٹری پر واپس آ رہی ہے۔سیتارمن نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ معیشت میں بحالی کورونا وائرس کی دوسری لہر سے متاثر ہوئی تھی، لیکن اب یہ دوبارہ پٹری پر آرہی ہے۔ تمام بڑے معاشی اشاریے سے ایسے ثبوت مل رہے ہیں۔ خوردہ مہنگائی 6 فیصد سے نیچے آ گئی ہے اور بجلی کی کھپت میں اضافہ ہوا ہے۔ مینوفیکچرنگ کی سرگرمیاں شروع ہو چکی ہیں۔

کورونا وائرس کی وجہ سے متاثر ہونے والی طلب کو تیز کرنے کے لیے کیے جانے والے اقدامات کے بارے میں پوچھے جانے پر انہوں نے کہا کہ اس کے لیے پہلے ہی انتظامات کر لیے گئے ہیں۔ چھوٹے شہروں کے تاجروں کو ڈیڑھ لاکھ روپے تک آسان قرض دینے کے اقدامات کیے گئے ہیں ، جس سے طلب بڑھانے میں مدد مل رہی ہے۔ اس کے بعد تنخواہ دار لوگوں کی تنخواہ وغیرہ میں اضافہ کیا گیا ہے۔


کاروبار میں آسانی سے متعلق ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ریاستوں نے اس رفتار سے کام نہیں کیا جس رفتار کے ساتھ مرکزی حکومت نے اس سمت میں کام کیا ہے ، جس کی وجہ سے ٹارگیٹڈ نتائج حاصل کرنے میں کچھ مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انفراسٹرکچر کسی بھی معیشت کو تقویت دینے کی پہلی مانگ ہوتی ہے اور مودی حکومت نے بڑے صنعتی علاقوں کو بندرگاہوں اور ہوائی اڈوں سے جوڑنے پر زور دیتے ہوئے انفراسٹرکچر پلان کے ساتھ ساتھ ماسٹر پلان بھی تیار کیا ہے۔

جی ایس ٹی کی شرحوں کو معقول بنانے کے بارے میں پوچھے جانے پر وزیر خزانہ نے کہا کہ اس سلسلے میں جی ایس ٹی کونسل کی میٹنگوں میں پہلے بھی بات چیت کی گئی تھی لیکن ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ کورونا کی وجہ سے ، فی الحال ایسا ہوتا ہوا دکھائی نہیں دیتا، لیکن اب جلد ہی جی ایس ٹی کونسل کی میٹنگ ہوگی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔