دہلی میں تعمیراتی مزدوروں کے رجسٹریشن میں فراڈ کا خدشہ

نرمان مزدور ادھیکار ابھیان کے کنوینر تھانیشور دیال آدی گوڑ نے کہا کہ بورڈ کے پورٹل پر 10 لاکھ سے زیادہ لوگ رجسٹریشن کرا چکے ہیں، جبکہ دہلی میں تعمیراتی کارکنوں کی تعداد صرف 10 لاکھ ہے۔

مزدوروں، تصویر آئی اے این ایس
مزدوروں، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: دہلی بلڈنگ اینڈ کنسٹرکشن ورکرز ویلفیئر بورڈ میں تعمیراتی مزدوروں کی آن لائن رجسٹریشن میں فراڈ کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے ’نرمان مزدور ادھیکار ابھیان‘ نے کہا ہے کہ اصل مزدوروں کے حقوق اور مفادات کو ہڑپنے کی سازش ہو رہی ہے۔

نرمان مزدور ادھیکار ابھیان کے کنوینر تھانیشور دیال آدی گوڑ نے بدھ کو یہاں کہا کہ بورڈ کے پورٹل پر اب تک 10 لاکھ سے زیادہ لوگ سے زائد رجسٹریشن کرا چکے ہیں، جبکہ دہلی میں تعمیراتی کارکنوں کی تعداد صرف 10 لاکھ ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ دہلی میں ہر تعمیراتی مزدور کا رجسٹریشن بورڈ میں ہو چکا ہے۔


انہوں نے الزام لگایا کہ بورڈ کے رجسٹریشن کے ذریعے دہلی سرکار ووٹ بینک تیار کر رہی ہے۔ اس سے بورڈ اپنے اصل مقاصد کو پورا نہیں کر پائے گا۔ بورڈ میں نان کنسٹرکشن ورکرز کے رجسٹریشن کو فروغ دیا جا رہا ہے۔ اس سے تعمیراتی مزدوروں کے ویلفیئر فنڈز کے غلط استعمال کو فروغ ملے گا۔ انہوں نے رجسٹریشن کے موجودہ عمل میں بہتری کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ غیر تعمیراتی مزدوروں کے رجسٹریشن منسوخ کیے جائیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔