کسانوں کو چاہیے کہ وہ اپنے اعتراضات دلائل کے ساتھ رکھیں: نریندر تومر

مرکزی وزیر صحت نریندر سنگھ تومر کا کہنا ہے کہ حکومت کسانوں کی فلاح و بہبود کے لئے پرعزم ہے اور ان کااحترام کرتی ہے۔ زرعی قوانین کسانوں کے مفاد میں ہیں۔

مرکزی وزیر زراعت نریندر تومر / آئی اے این ایس
مرکزی وزیر زراعت نریندر تومر / آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: وزیر زراعت نریندر سنگھ تومر نے بدھ کو کہا ہے کہ کاشتکار تنظیمیں زرعی اصلاحات قوانین پر اپنے اعتراض کی وجوہات پیش کریں، حکومت ان کو حل کرے گی۔ پریس کانفرنس میں ایک سوال کے جواب میں مسٹر تومر نے کہا کہ مشتعل کسان تنظیمیں جب چاہیں گے تب بات چیت کریں گے۔ کسانوں تنظیموں کے ساتھ 11 دور کے مذاکرات ہوئے ، ان کو کیا اعتراض ہے، اس کا نہ تو پارلیمنٹ میں جواب دیا گیا اور نہ ہی کسان تنظیموں نے۔ حکومت قوانین کی خرابیاں دور کرے گی۔

نریندر تومر نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے بحث کے دوران کسانوں کو ٹھوس تجاویز دی گئیں۔ زرعی اصلاحات کے قوانین کو ڈیڑھ سال سے معطل رکھا گیا ہے۔ حکومت کسانوں کی فلاح و بہبود کے لئے پرعزم ہے اور ان کااحترام کرتی ہے۔ زرعی قوانین کسانوں کے مفاد میں ہیں۔ گزشتہ سات برسوں کے دوران کسانوں کی آمدنی میں اضافے کے لئے بے مثال فیصلے کیے گئے ہیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ چھ ماہ سے کسان زرعی اصلاحات کے تین قوانین کے خاتمے کا مطالبہ کرتے ہوئے قومی دارالحکومت کی سرحدوں پر احتجاج کر رہے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔