کسان تحریک: 26 جنوری کو دہلی میں ہی نکلے گی ’ٹریکٹر پریڈ‘، دہلی پولس رضامند!

زرعی قوانین کے خلاف دہلی کی سرحدوں پر مظاہرہ کر رہے کسان 26 جنوری کو راجدھانی میں ہی ’ٹریکٹر پریڈ‘ نکالیں گے۔ اس تعلق سے آج کسانوں اور دہلی پولس کے درمیان ہوئی میٹنگ میں اتفاق قائم ہو گیا ہے۔

یوگیندر یادو
یوگیندر یادو
user

قومی آوازبیورو

اس سال یوم جمہوریہ پر راجدھانی دہلی کے اندر ٹریکٹر پریڈ نکالنے کے لیے پرعزم کسانوں کے لیے راستہ ہموار ہو گیا ہے۔ دہلی کی سرحدوں پر متنازعہ زرعی قوانین کے خلاف تحریک چلا رہے کسانوں اور پولس کے درمیان آج ہوئی میٹنگ میں اس بات پر اتفاق قائم ہوا کہ 26 جنوری کو یوم جمہوریہ پریڈ کسان دہلی میں نکال سکتے ہیں۔ اس سے قبل دہلی پولس اس بات کے لیے رضامند نہیں تھی اور اس نے کہا تھا کہ دہلی کی سرحدوں پر وہ بلاجھجک ٹریکٹر پریڈ کریں، لیکن دہلی میں داخل نہ ہوں۔ لیکن کسانوں کے عزائم کو دیکھتے ہوئے آج ہوئی میٹنگ کے دوران دہلی پولس نے اپنی رضامندی ظاہر کر دی۔

کسان لیڈروں اور پولس کی میٹنگ ختم ہونے کے بعد سوراج انڈیا کے سربراہ یوگیندر یادو نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’26 جنوری کو کسان اس ملک میں پہلی بار ’یوم جمہوریہ پریڈ‘ کرے گا۔ پانچ دور کی میٹنگ کے بعد ان ساری باتوں پر اتفاق قائم ہو گیا ہے۔‘‘ انھوں نے مزید کہا کہ ’’سبھی بیریکیڈ کھلیں گے، ہم دہلی کے اندر جائیں گے اور مارچ کریں گے۔ راستے کے بارے میں موٹے طور پر اتفاق بن گیا ہے، جس پر آج رات آخری فیصلہ ہو جائے گا۔‘‘

یوگیندر یادو نے اپنی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے کہا کہ ’’26 جنوری کو ہم اپنے دل کا جذبہ ظاہر کرنے کے لیے راجدھانی کے اندر جائیں گے۔ اس یوم جمہوریہ پر ایک ایسی تاریخی کسان پریڈ ہوگی، جیسی اس ملک نے کبھی نہیں دیکھی۔ یہ پرامن پریڈ ہوگی اور اس پریڈ سے ملک کی یوم جمہوریہ پریڈ پر یا اس ملک کی سیکورٹی و آن بان شان پر کوئی داغ نہیں لگے گا۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next