کیجریوال کی صنعت کاروں کے ساتھ میٹنگ کے دوران کسانوں کی زبردست نعرے بازی

باتھ کیسل ریزروٹ میں کیجریوال سے ملاقات کے لیے جالندھر کے 500 صنعت کاروں کو مدعو کیا گیا ہے، ان کی آمد سے قبل ہی وہاں بڑی تعداد میں پولیس فورس تعینات ہے۔

اروند کیجریوال، تصویر یو این آئی
اروند کیجریوال، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

جالندھر: عام آدمی پارٹی کے قومی کنوینر اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کے خلاف احتجاج کرنے والے کسانوں نے بدھ کے روز جالندھر-دہلی قومی شاہراہ کو جام کردیا۔ کیجریوال جالندھر- دہلی قومی شاہراہ پر واقع باتھ کیسل ریزورٹ میں جالندھر کے تاجروں کے ساتھ میٹنگ کر رہے ہیں۔ ریزورٹ کے باہر کھڑے کسانوں نے کیجریوال کے خلاف نعرے لگائے۔

اروند کیجریوال کی میٹنگ سے پہلے، ماحول اس وقت کشیدہ ہو گیا جب ایک سیکورٹی میں تعینات ایک جوان نے مبینہ طور پر کسانوں کے ساتھ بدسلوکی کی۔ اس سے ناراض ہوکر کسانوں نے اروند کیجریوال کے سارے بورڈ توڑکر ہائی وے کو جام کردیا اور سیکورٹی اہلکاروں سے معافی مانگنے کے لئے کہا۔


کسانوں نے وہاں سے گزرنے والی پنجاب روڈ ویز بسوں کو روکنے کی بھی کوشش کی ہے۔ فی الحال میٹنگ کی جگہ کے آس پاس ماحول کشیدہ ہے۔ اروند کیجریوال سے ملاقات کے لیے 500 صنعت کاروں کو مدعو کیا گیا ہے۔ ان کی آمد سے قبل ہی وہاں بڑی تعداد میں پولیس فورس تعینات ہے۔ پولیس نے میڈیا کو ریزورٹ میں داخل ہونے سے بھی روک دیا ہے۔ واضح رہے کہ اروند کیجریوال منگل کی شام اپنے دو روزہ دورے پر جالندھر پہنچے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔