ڈی جی پی تقرری معاملہ: ممتا حکومت کو سپریم کورٹ سے دھچکا

سپریم کورٹ نے یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی) کو نظرانداز کر کے ڈائریکٹر جنرل آف پولیس (ڈی جی پی) کی تقرری کی اجازت سے متعلق مغربی بنگال کی عرضی جمعہ کے روز مسترد کردی

سپریم کورٹ / آئی اے این ایس
سپریم کورٹ / آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی) کو نظرانداز کر کے ڈائریکٹر جنرل آف پولیس (ڈی جی پی) کی تقرری کی اجازت سے متعلق مغربی بنگال کی عرضی جمعہ کے روز مسترد کر دی۔

جسٹس ایل ناگیشور راؤ ، بی آر گوائی اور بی وی ناگ رتنا کی بینچ نے ڈی جی پی کی تقرری میں یو پی ایس سی کی شرکت سے چھوٹ کی اجازت سے متعلق عرضی پر سماعت سے انکار کر دیا۔ ریاستی حکومت نے پولیس اصلاحات کے حوالے سے ’پرکاش سنگھ‘ معاملے میں عدالت اعظمیٰ کے 2018 کے حکم میں ترمیم کے سلسلے میں ایک مداخلت عرضی دائر کی۔


ریاستی حکومت کی جانب سے پیش ہونے والے سینئر ایڈوکیٹ سدھارتھ لوتھرا نے دلیل پیش کی کہ پولیس افسران کی نگرانی کا ریاستی حکومت کو اختیار ہوتا ہے ، لیکن سپریم کورٹ کے منفی رخ کو دیکھ کر انہوں نے عرضی واپس لینے کی اجازت دینے کی درخواست بینچ سے کی ، جسے اس نے قبول کر لیا ۔

عدالت نے مغربی بنگال حکومت کو پولیس اصلاحات سے متعلق اہم معاملات میں فریق بننے کی اجازت دے دی ہے ۔ سماعت کے دوران پولیس اصلاحات معاملے کے اہم عرضی گزارپرکاش سنگھ کی جانب سے پیش ہونے والے وکیل پرشانت بھوشن نےعدالت سے شنوائی جلداز جلد کرنے کی درخواست کی ، اس پر بینچ نےاکتوبرمیں سماعت کا فیصلہ کیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔