دہلی تشدد: امریکی کمیشن کا اظہار تشویش، حکومت ہند کا وضاحتی بیان

یو ایس سی آئی آر ایف کی کمشنر ارونیما بھارگو نے کہا ’’پوری دہلی میں سفاکانہ اور بے قابو تشدد جاری نہیں رہ سکتے۔ حکومت ہند کو اپنے تمام شہریوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے فوری کارروائی کرنی چاہیے‘‘۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: وزارت خارجہ نے دہلی کے شمال مشرقی علاقوں میں پھیلے تشدد کے حوالہ سے بین الاقوامی مذہبی آزادی سے متعلق امریکی کمیشن (یوایس سی آئی آر ایف) کی جانب سے ظاہر کی گئی تشویش كو مسترد کرتے ہوئے جمعرات کو کہا کہ کمیشن کا تبصرہ حقائق طور پر غلط اور گمراہ کن ہیں۔

وزارت خارجہ کے ترجمان رويش کمار نے دہلی کے شمال مشرقی علاقوں میں پھیلے تشدد کے سلسلہ میں کیے جا رہے تبصروں کے بارے میں میڈیا کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا ’’میں نے یو ایس سی آئی آر ایف، میڈیا کے کچھ حصوں اور کچھ دوسرے لوگوں کی طرف سے کیے گئے تبصروں کو دیکھا ہے۔ یہ تبصرے حقائق پر مبنی نہیں ہیں اور مکمل طور غلط اور گمراہ کرنے والے ہیں اور ایشوز کو سیاست زدہ کرنے کے مقصد سے کیے گئے ہیں‘‘۔

یو ایس سی آئی آر ایف کی کمشنر ارونیما بھارگو نے دہلی میں تشدد کے سیاق و سباق میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا ’’پوری دہلی میں سفاکانہ اور بے قابو تشدد جاری نہیں رہ سکتے ہیں۔ حکومت ہند کو اپنے تمام شہریوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے فوری طور پر کارروائی کرنی چاہیے‘‘۔

اس پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے ترجمان نے کہا کہ اس طرح کے تبصرے سے لگتا ہے کہ اس مسئلہ کو سیاست سے آلودہ کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا ’’ہماری لا اینڈ آرڈر بنائے رکھنے والی ایجنسیاں متاثرہ علاقوں میں تشدد کو روکنے اور اعتماد اور حالات کو بحال کرنے کے لئے کام کر رہی ہیں‘‘۔

ترجمان نے کہا کہ حکومت کے اعلیٰ افسران حالات کو معمول پر لانے کے عمل میں شامل ہیں اور وزیر اعظم نریندر مودی نے عوامی طور امن و امان ور بھائی چارہ کو برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا ’’ہم درخواست کرتے ہیں کہ اس حساس ماحول کو دیکھتے ہوئے کوئی بھی غیر ذمہ دارانہ بیان نہ دے‘‘۔