دہلی میں ریزیڈینٹ ڈاکٹرس کی آج سے ہڑتال، او پی ڈی خدمات بند رہیں گی

ڈاکٹروں کی ہڑتال ایسے وقت ہورہی ہے جب دہلی میں اومیکرون کے معاملوں میں اضافہ ہو رہا ہے اور خطرہ بڑھ رہا ہے ۔ دہلی میں اومیکرون کے معاملوں کی تعداد اب دس ہو گئی ہے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

دہلی میں ایک مرتبہ پھر مریضوں کی دقتوں میں اضافہ ہونے والا ہے کیونکہ ریزیڈینٹ ڈاکٹروں کی تنظیم فیڈریشن آف ریزیڈینٹ ڈاکٹرس ایسو سیشن (فورڈا) نے مرکزی وزیر صحت مانسکھ مانڈویا کو خط کے ذریعہ بتا دیا تھا کہ 17 دسمبر یعنی آج سے دہلی کے تمام ہسپتالوں میں او پی ڈی اور ایمرجینسی خدمات بند رہیں گی کیونکہ وہ ہڑتال پر جا رہے ہیں ۔ ساتھ ہی اس تنظیم نے دوسری ریاستوں کے میڈیکل کالج کے ریزیڈینٹ ڈاکٹروں سے ہڑتال میں شامل ہونے کی اپیل کی ہے۔ واضح رہے بینک ملازمین پہلے سے ہی دو دن کی ہڑتال پر ہیں۔

فورڈا کے مطابق یقین دہانی کرائے جانے کے ایک ہفتہ بعد بھی مرکزی حکومت کی جانب سے ان کے مطالبات پر ابھی تک کوئی جواب نہیں ملا ہے۔نیٹ پی جی کاؤنسلنگ معاملہ میں بھی ابھی مرکزی حکومت نے تاریخوں کا اعلان نہیں کیا ہے اور اس وجہ سے ریذیڈنٹ ڈاکٹرس ہڑتال کرنے پر مجبور ہیں۔واضح رہے اس سے پہلے تین دسمبر کو ڈاکٹرس نے ہڑتال کی تھی جس کی وجہ سے مریضو کو در در بھٹکنا پڑا تھا۔


واضح رہے پچھلی مرتبہ ایک ہفتہ چلی ہڑتال کے بعد مریضوں کی پریشانی کو دیکھتے ہوئے فورڈا نے نو دسمبر سے ایک ہفتہ کے لئے اپنی ہڑتال پر روک لگا لی تھی اور حکومت کو کاؤنسلنگ شروع کرنے کے لئے ایک ہفتہ کا وقت دیا تھا لیکن کاؤنسلنگ شروع نہ ہونے کی وجہ سے اب تنظیم نے دوبارہ ہڑتال پر جانے کا فیصلہ لیا ہے۔

ڈاکٹروں کی ہڑتال ایسے وقت ہورہی ہے جب دہلی میں اومیکرون کے معاملوں میں اضافہ ہو رہا ہے اور خطرہ بڑھ رہا ہے ۔ دہلی میں اومیکرون کے معاملوں کی تعداد اب دس ہو گئی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔