منڈکا آتشزدگی: عمارت کا مالک منیش لاکڑا گرفتار

منڈکا کی عمارت میں ہونے والی آتشزدگی کے سلسلہ میں دہلی پولیس نے اہم کامیابی حاصل کی ہے، پولیس نے عمارت کے مالک منیش لاکڑا کو گرفترا کر لیا ہے

منڈکا آتشزدگی / آئی اے این ایس
منڈکا آتشزدگی / آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: قومی راجدھای کے منڈکا علاقہ میں ہونے والی آتشزدگی کے سلسلہ میں پولیس نے اہم کامیابی حاصل کرتے ہوئے عمارت کے مالک منیش لاکڑا کو گرفتار کر لیا ہے۔ منڈکا علاقہ میں ایک کمرشل عمارت میں جمعہ کے روز آگ لگ گئی تھی، اس واقعہ میں 27 افراد کی جان چلی گئی تھی۔

آتشزدگی کے سلسلہ میں درج پولیس کی ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ عمارت کی دوسری منزل پر ایک میٹنگ جاری تھی جس میں بڑی تعداد میں لوگ شریک تھے کہ اچانک آگ بھڑک اٹھی اور لوگ اس میں پھنس گئے۔ عمارت میں کوئی ایمرجنسی ایگزٹ گیٹ بھی نہیں تھا۔


پولیس نے عمارت کے مالک منیش لاکڑا، اس کی ماں اور بیوی کے علاوہ دو بھائیوں ہریش اور ورون گوئل کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے، جنہوں نے جائیداد کرایہ پر لی تھی۔ ایف آئی آر کے مطابق گوئل برادران نے اپنے ملازمین کی حفاظت کا خیال نہیں رکھا۔ پولیس ان دونوں کو پہلے ہی گرفتار کر چکی ہے۔ موٹیویشنل (تحریکی) پروگرام کی وجہ سے واقعہ کے وقت زیادہ تر ملازمین دوسری منزل پر موجود تھے۔

ایف آئی آر منڈکا تھانے کے ایس ایچ او انسپکٹر گلشن ناگپال کی شکایت پر درج کی گئی ہے، جس میں لکھا گیا ہے کہ پولیس کو اس واقعے کی اطلاع ہفتہ کی شام 5.45 بجے پی سی آر کال کے ذریعے موصول ہوئی۔ پولیس اسٹیشن کا عملہ مین روہتک روڈ پر پلاٹ نمبر 193 پر بنی عمارت کے قریب پہنچا جہاں لوگ پہلے سے ہی نیچے جمع تھے۔ مین روڈ پر کچھ لوگ شیشے کی کھڑکی توڑ کر نیچے اتر آئے تھے۔ اس کے بعد فائر بریگیڈ کے عملے، این ڈی آر ایف کے عملے اور دیگر ایجنسیوں کو بھی موقع پر بلایا گیا۔


ایف آئی آر کے مطابق جس عمارت میں آگ لگی وہ پانچ سو مربع گز میں بنی ہوئی ہے جس میں بیسمنٹ سے لے کر چار منزلوں تک تعمیرات ہیں۔ اس کے اوپری حصے میں ایک رہائشی فلیٹ بنایا گیا ہے۔ یہ عمارت منیش لاکڑا کی ملکیت ہے جس کے والد بلجیت لاکڑا کا انتقال ہو چکا ہے۔ عمارت کے گراؤنڈ فلور پر دکانیں موجود ہیں، جبکہ پہلی سے تیسری منزل تک ’کافے امپیکس پرائیویٹ لمیٹڈ‘ کمپنی کا دفتر ہے۔ اس میں سی سی ٹی وی کیمروں، سموں، راؤٹر کے پرزوں کی اسمبلنگ امپورٹ کر کے تجارت کی جاتی ہے۔

اس کمپنی میں تقریباً 100 ملازمین کام کرتے ہیں جن میں سے 50 خواتین ہیں۔ جمعہ کے روز اس دفتر میں تحریکی پروگرام کی وجہ سے تمام ملازمین دوسری منزل پر موجود تھے۔ آگ لگنے کے بعد اندر پھنسے کچھ لوگوں نے سامنے والے شیشے کو توڑ کر مین روڈ سے باہر چھلانگ لگا دی۔ آگ لگنے کی وجہ سے کئی لوگ عمارت میں ہی پھنس گئے۔ عمارت میں داخل ہونے کا ایک ہی راستہ تھا اور وہ بھی گلی کے کنارے پر موجود تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔