نیا بینک گھوٹالہ: چاول کاروباری نے 6 بینکوں کو لگایا 400 کروڑ کا چونا

ہندوستانی بینکوں سے کروڑوں روپے لے کر بیرون ملک بھاگ جانے والوں کی فہرست بڑھتی جا رہی ہے اس میں نیا نام ایک چاول کاروباری کا بھی جڑ گیا ہے جس نے 6 بینکوں کو 400 کروڑ کا چونا لگا دیا

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

بینکوں سے قرض لے کر اسے ادا نہ کرنے اور ملک چھوڑ کر بھاگ جانے کے معاملے بڑھتے ہی جا رہے ہیں۔ مفرور کاروباریوں میں اب چاول کی تجارت کرنے والی کمپنی ’رام دیو انٹرنیشنل لمیٹڈ‘ کا نام بھی شامل ہو گیا ہے۔ این ڈی ٹی وی کی ایک رپورٹ کے مطابق دہلی میں قائم یہ کمپنی باسمتی چاول برآمد کرتی تھی۔ بتایا جا رہا ہے کہ ایس بی آئی اور دوسرے بینکوں کا اس پر 400 کروڑ روپے سے زائد کا قرض ہے۔

رپورٹ کے مطابق، الزام ہے کہ دہلی کے رہنے والے اس کمپنی کے مالک نے ایس بی آئی اور کچھ دوسرے بینکوں سے قرض لیا تھا، لیکن اس کے خلاف چار سالوں تک کوئی شکائت نہیں ہوئی۔ اب پتہ چلتا ہے کہ کمپنی کا مالک ملک سے بھاگ گیا ہے۔ اسٹیٹ بینک آف انڈیا کی شکایت پر سی بی آئی نے کمپنی کے مالک اور س کے چار ڈائریکٹروں کے خلاف معاملہ درج کر لیا ہے۔ سی بی آئی کی جانچ میں انکشاف ہوا ہے کہ اس شخص نے 6 بینکوں سے قرض لیا تھا اور 2016 سے فرار ہے۔

رام دیو انٹرنیشنل نے کل 414 کروڑ روپے بینکوں سے قرض لیے ہیں۔ اس میں 173.11 کروڑ ایس بی آئی سے، کینرا بینک سے 76.09 کروڑ، یونین بینک آف انڈیا سے 64.31 کروڑ روپے، 51.31 کروڑ سینٹرل بینک آف انڈیا سے، 36.91 کروڑ کارپوریشن بینک سے اور 12.27 کروڑ روپے آئی ڈی بی آئی بینک سے لے کر فرار ہو گیا ہے۔

سی بی آئی نے فی الحال کمپنی اور اس کے ڈائریکٹر، نریش کمار، سریش کمار، سنگیت اور کچھ نامعلوم سرکاری افسران کے خلاف معاملہ درج کیا ہے۔ اس میں دھوکہ دہی، کریمینل بریچ اور ٹرسٹ اور بدعنوانی کے الزامات عائد کیے گئے ہیں۔ ایس بی آئی کی جانب سے کی گئی شکایت میں کہا گیا ہے کہ کمپنی کو این پی اے (نان پرفارمنگ اسیٹ) میں ڈال دیا گیا ہے۔

ایس بی آئی نے کہا کہ سال 2016 میں کیے گئے آڈیٹ میں پایا گیا کہ ملزم نے کھاتوں میں گڑبڑی کی، بیلنس شیٹ میں دھوکہ دہی اور غیر قانونی طریقہ سے پلانث اور مشینری کو ہٹا دیا تاکہ غیرقانونی طریقہ سے بینک فنڈ میں لاگت کو گھٹایا جا سکے۔ اس کے بعد جب بینک نے جانچ کی تو کمپنی کے ارکان غائب ہو گئے۔ بعد میں معلوم چلا کہ سبھی ملک چھوڑ کر فرار ہو گئے ہیں۔

معاملہ کی جانچ کر رہے افسران نے این ڈی ٹی وی کو بتایا کہ ایس بی آئی نے شکایت اس وقت کی جب اس کا قرض واپس نہیں ملا، کیوںکہ ملزمان اپنی بیشتر املاک فروخت کر کے فرار ہو گئے ہیں۔ اس معاملہ میں تاحال ایس بی آئی کی جانب سے کوئی بیان جاری نہیں ہوا ہے۔

next