'مرے ہوئے لوگ کہانی نہیں سناتے'، وکاس دوبے کے انکاؤنٹر پر عمر عبداللہ کا تبصرہ

جموں وکشمیر پولس کے سابق سربراہ ڈاکٹر شیش پال وید نے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ اترپردیش کی پولس کریڈٹ کی مستحق ہے کیونکہ اس نے وکاس دوبے کو فرار ہونے میں کامیاب نہیں ہونے دیا۔

جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلی عمر عبداللہ
جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلی عمر عبداللہ
user

یو این آئی

سری نگر: نیشنل کانفرنس کے نائب صدر و سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے اتر پردیش کے کانپور میں ایک ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولس سمیت 8 پولس اہلکاروں کو انتہائی بے رحمی کے ساتھ قتل کرنے والے ملزم گینگسٹر وکاس دوبے کی جمعہ کی صبح پولس تصادم میں ہلاکت پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ 'مرے ہوئے لوگ کوئی کہانی نہیں سناتے ہیں'۔ اس تبصرہ کے ذریعہ ان کا بظاہر کہنا تھا کہ وکاس دوبے کئی بڑے لوگوں کے راز جانتے تھے اور ان کی ہلاکت کے ساتھ وہ راز بھی دفن ہوگئے ہیں۔

اس درمیان جموں وکشمیر پولس کے سابق سربراہ ڈاکٹر شیش پال وید نے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ اترپردیش کی پولس کریڈٹ کی مستحق ہے کیونکہ اس نے وکاس دوبے کو فرار ہونے میں کامیاب نہیں ہونے دیا۔ انھوں نے مزید کہا کہ "یو پی پولس کے مطابق بدنام زمانہ مجرم اور کانپور یو پی کے گینگسٹر وکاس دوبے کو جمعے کی صبح ایک تصادم میں مارا گیا۔ یو پی پولس جس نے وکاس کو فرار ہونے میں کامیاب نہیں ہونے دیا، کریڈٹ کی مستحق ہے۔ اس کا فرار ہونا خطرناک ثابت ہوتا۔ سیاستدانوں – مجرموں – پولس کے درمیان ساز باز سے پردہ اٹھانے کی ضرورت ہے۔" واضح رہے کہ کانپورمیں 8 پولس اہلکاروں کو قتل کرنے کے کیلدی ملزم وکاس دوبے جمعے کی صبح بھونتی علاقے کے قریب پولس مقابلے میں مارا گیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔