مدھیہ پردیش میں جنگل راج، غریب دلت جوڑے کی پولیس نے کی پٹائی، ایس پی ہٹائے گئے، دیکھیں ویڈیو

کمل ناتھ نے دلت جوڑے کی پٹائی معاملہ پرسوال کیا ہے کہ یہ کیسا جنگل راج ہے اور شیو راج حکومت ریاست کو کدھر لے جا رہی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

سید خرم رضا

مدھیہ پردیش کے ضلع گونا کے جگن پور گاؤں میں قبضہ ہٹانے کے دوران غریب جوڑے کے ساتھ زد و کوب کے سبب وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے آج رات کلیکٹر ایس وشوناتھ اور پولیس سپرنٹنڈنٹ (ایس پی) علیٰ الفور معطل کیے جانے کی ہدایت دی۔

مدھیہ پردیش کے سابق وزیر اعلی کمل ناتھ نے اس معاملہ پر ٹویٹ کر کے کہا ہے کہ ’’یہ شیو راج سرکار ریاست کو کہاں لے جا رہی ہے۔یہ کیسا جنگل راج ہے۔گونا کے تھانہ کینٹ علاقہ میں ایک دلت کسان جوڑےپر بڑی تعداد میں پولیس والوں کے ذریعہ ظالمانہ طریقہ سےلاٹھی چارج۔‘‘ کمل ناتھ نے اپنے ٹویٹ کے ساتھ ویڈیو بھی شئیر کی ہے۔

مسٹر چوہان نے بھوپال میں اس واقعہ سے متعلق نکات کی معلومات حاصل کرنے کے بعد کہا ہےکہ کسی بھی طرح کا ظلم و بربریت برداشت نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے جگن پور گاؤں کی گذشتہ روز کے مکمل واقعہ کی اعلیٰ سطحی تفتیش کا حکم دیا ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ اس میں جو بھی مجرم پایا جائے گا اس کے خلاف سخت سے سخت کاروائی کی جائے گی۔

جگن پور گاؤں میں گذشتہ روز قبضہ ہٹانے کی کاروائی کے دوران راجکمار اہیروار اور ان کی اہلیہ ساویتربائی نے زہر پی لیا تھا۔ سرکاری زمین پر قبضہ کرنے کا ملزم گبو پاردی اس جوڑے کے علاوہ ان کے بچوں کو بھی جراثیم کُش پینے کے لیے مشتعل کر رہا تھا۔

اس دوران پولیس اہلکاروں نے اس جوڑے کے ساتھ مارپیٹ بھی کی۔ اس واقعہ کی ویڈیو سوشل ممیڈیا پر وائرل ہو گیا۔راجیہ سبھا رکن جیوتی رادتیہ سندھیا نے دیر رات ٹویٹ کیا کہ گونا کے بد بختانہ واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کلیکٹر اور ایس پی کو فوراً ہٹانے کی ہدایت دے دی ہے۔سابق وزیر اعلیٰ کمل ناتھ اور سابق وزیر جے وردھن نے شیوراج حکومت کو ہدف تنقید بنایا ہے۔

(یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

Published: 16 Jul 2020, 6:46 AM
next