گردابی طوفان ’یاس‘: پی ایم مودی نے راحتی پیکیج کا کیا اعلان، بنگال کو دیا جھٹکا!

پی ایم مودی نے 1000 کروڑ روپے کے راحتی پیکیج کا اعلان کیا ہے، لیکن اس اعلان میں بنگال کے لیے جھٹکا یہ ہے کہ ریاست کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے جو گزارش پی ایم مودی سے کی تھی، اس پر توجہ نہیں دی گئی۔

نریندر مودی، تصویر پی آئی بی
نریندر مودی، تصویر پی آئی بی
user

تنویر

گردابی طوفان ’یاس‘ نے اڈیشہ اور مغربی بنگال میں زبردست تباہی مچانے کے بعد جھارکھنڈ ، بہار اور یو پی میں بھی اپنا اثر چھوڑا۔ جھارکھنڈ میں تو کئی مکانات منہدم ہو گئے اور رانچی واقع ایک نوتعمیر پل کے بھی ٹوٹنے کی خبریں سامنے آئی ہیں۔ اس درمیان وزیر اعظم نریندر مودی نے ’یاس‘ کی تباہی کا جائزہ لینے کے لیے اڈیشہ اور مغربی بنگال کا دورہ کیا۔ بعد ازاں انھوں نے 1000 کروڑ روپے کے راحتی پیکیج کا اعلان کیا۔ لیکن اس اعلان میں مغربی بنگال کے لیے ایک جھٹکا یہ ہے کہ ریاست کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے جو گزارش پی ایم مودی سے کی تھی، اس پر توجہ نہیں دی گئی۔

دراصل ممتا بنرجی کی آج جب مغربی بنگال کے مدنی پور میں وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات ہوئی تو انھوں نے ریاست کو ہوئے نقصانات سے متعلق رپورٹ سونپی اور 20 ہزار کروڑ روپے کے راحتی پیکیج کا مطالبہ کیا تھا۔ لیکن پی ایم مودی نے فوری طور پر صرف 1000 کروڑ روپے راحتی پیکیج کا اعلان کیا ہے، اور اس میں بھی 500 کروڑ روپے فوری طور پر اڈیشہ کو دینے کا اعلان کیا ہے، جب کہ بقیہ 500 کوڑ روپے مغربی بنگال اور جھارکھنڈ کے درمیان تقسیم ہوں گے۔ بتایا جاتا ہے کہ دونوں ریاستوں کو ملا کر نقصانات کے حساب سے 500 کروڑ روپے دیے جائیں گے۔


وزیر اعظم دفتر کا کہنا ہے کہ نقصان کا جائزہ لینے کے لیے مرکزی ٹیم ریاستوں کا دورہ کرے گی۔ معائنہ کے بعد اندازے کی بنیاد پر آگے راحتی امداد دی جائے گی۔ حالانکہ اس درمیان پی ایم مودی نے اڈیشہ، مغربی بنگال اور جھارکھنڈ کو یقین دہانی کرائی ہے کہ مرکز اس مشکل وقت میں ریاستی حکومتوں کے ساتھ مل کر کام کرے گا۔ وزیر اعظم نے گردابی طوفان سے ہلاک ہونے والی فیملی کو 2-2 لاکھ روپے اور سنگین طور سے زخمی لوگوں کو 50 ہزار روپے دینے کا اعلان بھی کیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔