غریب کرایہ داروں کے معاملے میں کیجریوال حکومت نے کچھ نہیں کیا،عدالت نے دو ہفتوں میں جواب مانگا

جسٹس ریکھا پلّی سے کہا کہ فیصلے کو چھ ہفتے میں نافذ کرنے کی متعینہ مدت دو ستمبر کو ختم ہو گئی لیکن اس سمت میں دہلی حکومت کی جانب سے کوئی قدم نہیں اٹھایا ہے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

دہلی ہائی کورٹ نے اروند کیجریوال حکومت کو کورونا وبا کے سبب لاک ڈاؤن کی مار سے پریشان دہلی کے کرایہ داروں کا مکان کرایہ دینے کی پالیسی تیار کرنے کے لیے جمعہ کے روز مزید دو ہفتے کی مہلت دی۔

وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے کورونا کے دوران گزشتہ برس نافذ لاک ڈاؤن کے دوران کرایہ دینے میں نااہل غریبوں کا کرایہ حکومت کی جانب سے دینے کا اعلان کیا تھا۔ دہلی ہائی کورٹ نے ایک عرضی کی سنوائی کے بعد اس اعلان پر عمل کرنے کا حکم جولائی میں دہلی حکومت کو دیا تھا۔


جسٹس ریکھا پلّی کی بینچ نے دہلی ہائی کورٹ کے 22 جولائی کے اس فیصلے کو متعین کرکے چھ ہفتے میں نافذ کرنے سے متعلق ایک عرضی کی سنوائی کے دوران دونوں فریق کی دلیل سننے کے بعد حکومت کو یہ راحت دی۔ دہلی حکومت کی جانب سے پیش وکیل گورو جین نے جسٹس ریکھا پلّی سے کہا کہ فیصلے کو چھ ہفتے میں نافذ کرنے کی متعینہ مدت دو ستمبر کو ختم ہو گئی لیکن اس سمت میں دہلی حکومت کی جانب سے کوئی قدم نہیں اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرایہ کی ادائیگی کے سلسلے میں کوئی واضح پالیسی کے بغیر عدالت کے فیصلے پر عمل کیسے کیا جا سکتا ہے۔

عرضی گذاروں کے وکیل نے 22 جولائی کے جسٹس پرتیبھا ایم سنگھ کے فیصلے کا حوالہ دیا، جس میں مسٹر کیجریوال کے پریس کانفرنس میں کیے گئے اعلان اور وعدے کو قانونی طور پر نافذ کرنے کے لیے مستحق مانتے ہوئے حکومت کو اس پر عمل کرنے کا حکم دیا تھا۔


غور طلب ہے کہ کورونا کے سبب ملک کے دیگر علاقوں کے ساتھ ساتھ قومی دارالحکومت علاقے میں بھی لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا تھا۔ اس وجہ سے آئی معاشی کساد بازاری کے سبب بڑی تعداد میں عوام کے سامنے روزی-روزگار کا بحران کھڑا ہو گیا تھا۔ ایسے لوگوں کی زخموں پر مرہم لگانے کے لیے مسٹر کیجریوال نے 29 مارچ 2020 کو ایک پریس کانفرنس کی تھی۔ اس دوران انہوں نے کہا تھا کہ جو کرایہ دار غریبی کے سبب تھوڑا-بہت کرایہ نہیں دے پائیں گے، ان کی جانب سے دہلی حکومت مکان مالک کو کرایہ دے گی۔ انہوں نے مکان مالکان سے اپیل کرتےہوئے کہا تھا کہ وہ کرایہ داروں سے سختی نہ برتیں۔ ساتھ ہی انہوں نے اس پر عمل نہ کرنے والے مکان مالکوں پر قانونی کاروائی کی بات بھی کی تھی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔