لاک ڈاؤن: کالا بازاری کے خلاف کارروائیاں، کاروباریوں کے لئے کنٹرول روم کا قیام

ایس ڈی ایم پرشانت تیواری کی ٹیم نے غازی آباد کے مالی واڑا علاقہ میں ایک میڈیکل اسٹور پر چھاپہ مارا۔ اس میڈیکل اسٹور پر 20 روپے کی قیمت والا ماسک مہنگے داموں پر فروخت کیا جا رہا تھا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کورونا وائرس کے بڑھتے اثر کے پیش نظر ملکی سطح پر 21 روزہ ’لاک ڈاؤن‘ کا نفاذ کیا گیا ہے۔ اس کے پیش نظر حکومت نے ضروری اشیائے ضروریہ اور خدمات کی سپلائی کرنے والے کاروباریوں کے مسائل کے تدارک کے لئے مرکزی سطح پر ایک کنٹرول روم قائم کیا ہے۔ مرکزی کامرس اینڈ انڈسٹری کی وزارت نے جمعرات کو یہاں بتایا کہ یہ بعض گھریلو کاروبار اور صنعت ایسوسی ایشن کے فروغ محکمہ کے تحت بنایا گیا ہے۔

کنٹرول روم ملک بھر کے تاجروں کے لئے کام کرے گا۔ لازمی خدمات کی پیداوار، تقسیم اور فروخت میں آنے والے مسائل کا حل اس کنٹرول روم کے تحت ہوگا۔ اس پر کاروباری اپنے مسائل کے علاوہ تجاویز بھی دے سکتے ہیں۔ یہ کنٹرول روم مکمل لاک ڈاؤن کی مدت یعنی 14 اپریل تک کام کرے گا۔ کاروباری کنٹرول روم سے فون نمبر 23062487-011 اور ای میل ’contrlroondpiiptatgov.in‘ پر رابطہ کر سکتے ہیں۔

دریں اثنا، متعدد شہروں کے گلی، محلوں میں موجود دکاندار لوٹ مار پر آمادہ ہو گئے ہیں اور اشیائے ضروریہ کی کالا بازری بھی شروع ہو چکی ہے۔ اس کالا بازاری کو روکنے کے لئے مقامی ضلع مجسٹریٹ کی طرف سے تشکیل ٹیموں نے بدھ کے روز غازی آباد، مودی نگر، مراد نگر علاقوں میں چھاپا ماری کی۔

بلیک مارکیٹنگ کے خلاف چھاپہ ماری کے دوران کئی چھوٹے دکانداروں کو تنبیہ کر کے چھوڑ دیا گیا۔ جبکہ اندرا پورم میں واقع ایک آٹا چکی کے مالک کے خلاف سخت کارروائی کی گئی۔ اسی طرح ایک میڈیکل اسٹور کو سیل کردیا گیا۔ وہیں، دہلی سے ملحقہ نوئیڈا، گریٹر نوئیڈا میں لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کی اطلاعات بھی بدھ کو دن بھر موصول ہوتی رہیں۔ ان علاقوں میں سینکڑوں لوگوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی گئی۔

ضلعی انتظامیہ کی جانب سے میڈیا کو دی گئی اطلاع کے مطابق بدھ کے روز صدر ایس ڈی ایم پرشانت تیواری کی ٹیم نے غازی آباد کے مالی واڑا علاقہ میں ایک میڈیکل اسٹور پر چھاپہ مارا۔ اس میڈیکل اسٹور پر 20 روپے کی قیمت والا ماسک مہنگے داموں پر فروخت کیا جا رہا تھا۔ میڈکل اسٹور پر 10000 روپے کا جرمانہ عائد کرکے اس کا لائسنس بھی منسوخ کر دیا گیا ہے۔

غازی آباد ایڈیشنل میونسپل مجسٹریٹ ڈی پی سنگھ کی سربراہی میں ٹیم نے بدھ کی سہ پہر ’پوش علاقے‘ اندرا پورم میں چھاپہ ماری کی۔ یہاں اس ٹیم نے گلی میں موجود کئی چھوٹی بڑی دکانوں کی جانچ کی۔ چھاپے کے دوران ٹیم کو ایک چکی اور دال کی دکان پر اشیاء مقررہ قیمتوں سے زیادہ قیمت پر فروخت ہوتا ملا۔ لہذا موقع پر ہی ٹیم نے ملزم دکان اور چکی آپریٹر کے خلاف مقدمہ درج کر دیا۔

غازی آباد کے سٹی مجسٹریٹ شیو پرتاپ شکلا اور منڈی سکریٹری کی ٹیموں نے 200 سے زیادہ ٹھیلے، تقریباً 250 آٹو رکشہ اور ای رکشہ میں سبزی وغیرہ لدوا کر علاقہ کی دکانوں میں بھجوائے۔

غازی آباد کے لونی علاقہ سے بھی بدھ کے روز لاک ڈاؤن کے دوران اشیاء کی ناجائز قیمتیں وصول کیے جانے کی خبریں ضلع انتظامیہ کی ٹیموں کو ملتی رہیں۔ کئی مقامات پر ٹیموں نے چھاپے بھی مارے۔ ضلعی انتظامیہ کے ترجمان کے مطابق لونی میں زیادہ قیمت وصول کرنے والے 15 سے زیادہ دکانداروں کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی گئی۔

غازی آباد ضلع پولیس ترجمان سونوير سنگھ سولنکی نے جمعرات کو آئی اے این ایس کو فون پر بتایا، ’’بدھ کو لاک ڈاؤن کے دوران ضلع میں 700 لوگوں پر 150 سے زیادہ معاملے درج کیے گئے۔ پانچ ہزار سے زیادہ گاڑیوں کے چالان کاٹے گئے۔ جبکہ 240 گاڑیوں کو سیز کر دیا گیا، یہ کارروائی لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف عمل میں لائی گئی۔‘‘

قومی دارالحکومت دہلی اور یوپی کے غازی آباد سرحد پر واقع نوئیڈا (ضلع گوتم بودھ نگر) میں بدھ کے روز پولیس دن بھر لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی میں مصروف رہی۔

گوتم بودھ نگر پولیس کے ترجمان کے مطابق ، ’’یہاں بلا وجہ باہر نکلنے والے 405 افراد کے خلاف کارروائی کی گئی، جبکہ ضلع میں 2500 سے زیادہ گاڑیوں کے چالان کاٹے گئے، جبیکہ 250 سے زائد گاڑیاں ضبط کر لی گئیں۔‘‘ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر آف پولیس رنوجے سنگھ کے مطابق لاک ڈاؤن کا مذاق اڑانے والوں اور کالابازاری کرنے والوں پر پولیس اور ضلع انتظامیہ کی ٹیمیں مسلسل نظر بنائے ہوئے ہیں۔