کانگریس کو مضبوط کرنے کے لئے تمام رہنما متحد ہیں: سونیا

بی جے پی ایک بڑا چیلنج ہے اور اس سے نمٹنے کے لیے پارٹی کا ایک ’چنتن شیور‘ منعقد کیے جانے کی ضرورت ہےتاکہ اس مسئلے پر تفصیل سےغور ہو ۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

کانگریس کی عبوری صدر سونیا گاندھی نے کہا ہے کہ پارٹی کے تمام بڑے رہنما بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کا مقابلہ کرنے کے لیے متحد ہیں اور اس بابت حکمت عملی تیار کرنے کے لیے ’چِنتن شیور‘ لگایا جائے گا۔

کانگریس کے ذرائع کے مطابق محترمہ گاندھی نے ہفتے کے روز اپنی رہائش گاہ پر پارٹی کے سینیئر رہنماؤں کی ایک میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس ایک بڑا خاندان ہے اور یہاں جمہوری ڈھنگ سے ہر کسی کو بولنے کی آزادی ہے لہٰذا کئی بڑے مسائل پر نظریاتی اختلافات فطری ہیں لیکن پارٹی کو مضبوط کرنے کے لیے تمام رہنما متفق اور متحد ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کانگریس کے سامنے سب سے بڑا چیلنج بی جے پی کا ہے اور اس سے نمٹنے کے لیے پارٹی کا ایک ’چنتن شیور‘ منعقد کیے جانے کی ضرورت ہے جس میں اس مسئلے پر تفصیل سے بحث کی جاسکے۔

یہ پوچھنے پر کی ’چنتن شیور‘ کب منعقد ہوگا‘ ذرائع نے بتایا کہ اس بارے میں فی الحال کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔

میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہا کہ کانگریس کا یہ عظیم خاندان اس کے تمام رہنماؤں کا ہے اور سینیئر رہنماؤں کی اس میں خاص اہمیت ہے۔ ان رہنماؤں میں کئی ان کے والد اور سابق وزیراعظم راجیو گاندھی کے دوست ہیں اور وہ ان سب کا فطری طور ر بہت احترام کرتے ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ میٹنگ میں مسٹر گاندھی کو پارٹی کا صدر بنانے کا مطالبہ بھی کیا گیا۔ پارٹی کے باغی سمجھے جانے والے رہنماؤں نے بھی مسٹر گاندھی سے پارٹی کی کمان سنبھالنے کی درخواست کی۔ مسٹر گاندھی نے کہا کہ پارٹی کا جو حکم ہوگا وہ اس پر عمل کریں گے لیکن فی الحال پارٹی تنظیم کا انتخابی عمل جاری ہے اور نیا صدر کون ہوگا یہ سب انتخابی عمل پر چھوڑ دیا جانا چاہیے۔

میٹنگ میں محترمہ گاندھی اور راہل گاندھی کے ساتھ ہی اترپردیش کی انچارج جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی ، راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر غلم نبی آزاد، آنند شرما، منیش تیواری، ششی شیکھر، پی چدمبرم، بھوپیندر ہڈا، پرتھوی راج چوہان سمیت کئی رہنماؤں نے حصہ لیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 20 Dec 2020, 7:11 AM
next