شاہ کی ریلی کے لئے بی جے پی نے ایک لاکھ فون بانٹے: کانگریس

بہار کے تارکین وطن مزدور اب بھی مختلف ریاستوں میں پھنسے ہیں، تو ریاستی حکومت کو سب سے پہلے ان کو واپس ان کے گھر لانے کا کام کرناجانا چاہئے۔

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا
user

یو این آئی

کانگریس نے کہا ہے کہ بہار کے تارکین وطن مزدور ابھی لاک ڈاؤن کے مصائب سے کراہ رہے ہیں اور ملک میں جگہ جگہ پھنسے ہوئے ہیں اور ایسی صورت میں وزیر داخلہ امت شاہ کی ورچوئل انتخابی ریلی منعقد کرکے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بہار کے لوگو کے ساتھ ناانصافی کی ہے۔

کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر اکھلیش پرساد سنگھ نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ مسٹر شاہ نے اتوار کو چمپارن میں انتخابی بگل پھونک کر بہار کے ساتھ ناانصافی کی ہے۔ بہار میں اب تارکین وطن مزدوروں کے گھر واپس کی بدحالی کا زخم بھر انہیں ہے لیکن بی جے پی نے یہاں کے لوگوں کے زخموں پر نمک چھڑکنے کا کام کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ بہار ہر سطح سے پچھڑا ہوا ہے۔ ملک کے تیسری سب سے بڑی آبادی والی ریاست میں کورنا کے ٹیسٹ بھی نہیں ہو رہے ہیں اور وہاں اب تک صرف ایک لاکھ ٹیسٹ ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بہار کے تارکین وطن مزدور اب بھی مختلف ریاستوں میں پھنسے ہیں، تو ریاستی حکومت کو سب سے پہلے ان کو واپس ان کے گھر لانے کا کام کرناجانا چاہئے۔کانگریس لیڈر نے الزام لگایا کہ مسٹر شاہ کی ریلی کے لیے بی جے پی نے ایک لاکھ فون بانٹے ہیں اور اس کے لئے بہت بڑا خرچ کیا گیا ہے۔

واضح رہے بہار میں راشٹریہ جنتا دل نے کل امت شاہ کی ریلی کے خلاف تھالی بجا کر ریاست میں مخالفت کی تھی۔ تھالی کے ذریعہ مخالفت درج کرانے کے بعد آ ر جے ڈی رہنما اور سابق نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ کورونا کے اس بحران کے دوران امت شاہ کی ریلی کورونا متاثرین اور مہاجر مزدوروں کے زخموں پر نمک پاشی ہے۔

next