ممبئی میں خلافت کمیٹی کے تاریخی جلوس سمیت مہاراشٹر میں جلوسوں کی مشروط اجازت

کورونا کی احتیاطی تدابیر کے درمیان آل انڈیا خلافت کمیٹی کے زیر انتظام برآمد ہونے والے عید میلاد النبی ؐ کے جلوس کو مشروط طور پر اجازت دے دی گئی ہے

علامتی تصویر
علامتی تصویر
user

یو این آئی

ممبئی: کورونا کی احتیاطی تدابیر کے درمیان آل انڈیا خلافت کمیٹی کے زیر انتظام برآمد ہونے والے عید میلاد النبی ؐ کے جلوس کو مشروط طور پر اجازت دے دی گئی ہے۔ جلوس کے دوران صرف پانچ ٹرک اور ہر ٹرک پر صرف پانچ افراد سوار رہ سکتے ہیں۔ ایسا اس لئے کیا گیا ہے تاکہ ایک مقام پر زیادہ بھیڑ جمع نہ ہونے پائے۔

تفصیلات کے مطابق عید میلادالنبیؐ کے موقع پر 19 اکتوبر بروز منگل کو آل انڈیا خلافت کمیٹی کی جانب سے نکلنے والے جلوس کی تیاریوں کے سلسلے میں کمیٹی کے چیئرمین سرفراز آرزو و دیگر اہم شخصیات کی کوششوں کو اس وقت کامیابی ملی جب مہاراشٹر سرکار نے جلوس کو مشروط طور پر اجازت دے دی۔


اسی کے ساتھ حکومت نے ممبئی، ملاڈ، کرلا، اندھیری، باندرہ، گھاٹکوپر، وکرولی، ممبرا، تھانے، بھیونڈی، ناشک، مالیگاوں، دھولیہ، کولہاپور، شولاپور، اچل کرنجی، ناگپور، ایوت محل، جلگاوں، واشم، بارہ متی، اورنگ آباد، جالنہ، پربھنی، بیڑ، ناندیڑ کے علاوہ ریاست کے مسلم آبادی والے علاقوں میں عید میلادالنبیؐ کا جلوس نکالنے کی اجازت دے دی۔

خیال رہے کہ خلافت ہاوس سے برآمد ہونے والے تاریخی جلوس میں مہاراشٹر کے اقلیتی امور کے وزیر نواب ملک مہمان خصوصی کے طور پر شرکت کر رہے ہیں جبکہ جلوس کی قیادت رضا اکیڈمی کے روح رواں الحاج محمد سعید نوری کریں گے۔

جلوس کے استقبال کے لئے جو اسٹیج راستوں میں لگائے جاتے تھے ان کو بھی حسب سابق لگانے کی اجازت دی گئی ہے۔ نیز شرکائے جلوس اور دیگر لوگوں کے لئے پانی، سینی ٹائزر اور ماسک کی تقسیم کے لئے ٹیبل لگائے جا سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ لوگ اگر چاہیں تو لاوڈ اسپیکر کی اجازت لیکر اس کا بھی استعمال کر سکتے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔