پنجاب، ہریانہ، ایم پی اور گجرات سے راجستھان آنے والوں کو کورونا کی نگیٹو رپورٹ ظاہر کرنا لازمی

میٹنگ میں یہ فیصلہ لیا گیا کہ راجستھان میں اب پنجاب، ہریانہ اور مدھیہ پردیش سے آنے والوں کے لئے 72 گھنٹے قبل کورونا کے آر ٹی پی سی آر ٹیسٹ کی منفی رپورٹ دکھانا لازمی ہوگا۔

اشوک گہلوت، تصویر آئی اے این ایس
اشوک گہلوت، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

جے پور: عالمی وبا کورونا کے سبب اب پنجاب، ہریانہ، مدھیہ پردیش اور گجرات سے ر اجستھان آنے والوں کو بھی کورونا کی نگیٹو رپورٹ دکھانی ہو گی۔ وزیر اعلی اشوک گہلوت کی رہائش گاہ پر جمعہ کے روز کووڈ- 19 کے سلسلے میں منعقدہ اعلی سطحی جائزہ میٹنگ میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ کیرالہ اور مہاراشٹر سے راجستھان آنے والوں کی طرح اب پنجاب، ہریانہ، مدھیہ پردیش سے آنے والوں کے لئے 72 گھنٹے قبل کورونا کے آر ٹی پی سی آر ٹیسٹ کی منفی رپورٹ دکھانا لازمی ہوگا۔

واضح رہے کہ گزشتہ 25 فروری کو بھی کورونا جائزہ میٹنگ میں کیرالہ اور مہاراشٹر سے راجستھان آنے والوں کو کورونا کی منفی رپورٹ دکھانے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ راجستھان میں جمعہ کے روز کورونا کے 195 نئے کیسز سامنے آئے۔ اس سے اب تک کورونا متاثرین کی تعداد اب تک تین لاکھ 21 ہزار 123 ہوگئی ہے۔


تاہم ان میں تین لاکھ 16 ہزار 750 مریض صحتیاب ہوگئے ہیں اور اب ریاست میں کورونا کے چار ہزار 373 فعال کیسز ہیں۔ نئے کیسز میں سب سے ز ائد 43 کیسز ضلع ادے پور میں پائے گئے ہیں۔ جس سے ادے پور میں کورونا مریضوں کی تعداد بڑھ کر 12 ہزار 92 ہوگئی جن میں سے اب تک 11 ہزار 824 صحتیاب ہو چکے ہیں ۔

اسی طرح ڈونگر پور، جے پور 32، راجسمند میں 12 اور جودھ پور اور اجمیر میں دس دس نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔ اس سے جے پور میں کورونا متاثرین کی تعداد بڑھ کر 59 ہزار 692 ہوگئی جبکہ ان میں سے 58 ہزار 788 افراد صحتیاب ہوئے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 06 Mar 2021, 3:11 PM