چین ہمارے ملک میں پُل تعمیر کر رہا ہے، ڈر ہے کہ وزیر اعظم اس کا بھی افتتاح نہ کر ڈالیں! راہل گاندھی

راہل گاندھی نے کہا کہ ہمارے ملک میں چین اسٹریٹیجک پُل تعمیر کر رہا ہے اور وزیر عظم مودی کی خاموشی چینی فوج کے حوصلہ بڑھا رہی ہے۔

راہل گاندھی، تصویر یو ین آئی
راہل گاندھی، تصویر یو ین آئی
user

قومی آوازبیورو

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے ایل اے سی پر چین کی فوج کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں پر ایک بار پھر پی ایم مودی کو گھیرا ہے۔ انہوں نے اس کے لیے براہ راست پی ایم مودی کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔ راہل گاندھی نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ چین ہمارے ملک میں اسٹریٹیجک پل بنا رہا ہے۔ وزیر اعظم کی خاموشی سے پی ایل اے کے حوصلے بلند ہو رہے ہیں۔ اب خدشہ ہے کہ وزیر اعظم کہیں اس پل کا افتتاح کرنے نہ پہنچ جائیں۔

ہندوستان اور چین کے درمیان مشرقی لداخ کی سرحد پر ایک بار پھر کشیدگی بڑھنے لگی ہے۔ اس کشیدگی میں اضافے کے پیچھے چین کی نئی حرکت ہے۔ چین پینگونگ تسو جھیل کے کنارے ایک پل بنا رہا ہے۔ یہ پل 400 میٹر سے زیادہ لمبا ہے اور ایک بار مکمل ہونے سے چین کو خطے میں ایک اہم فوجی برتری حاصل ہو جائے گی۔ یہ پل آٹھ میٹر چوڑا ہے اور پینگونگ تسو جھیل کے شمالی کنارے پر چینی فوج کے اڈے کے بالکل جنوب میں واقع ہے۔ یہاں چینی اسپتال اور فوجیوں کی رہائش گاہیں بھی ہیں۔ یہ مشرقی لداخ کے قریب پینگونگ تسو جھیل کے ساتھ ایک ایسا علاقہ ہے، جس پر بھارت اور چین کے درمیان تعطل پیدا ہو رہا ہے۔


میڈیا رپورٹس کے مطابق 16 جنوری کی سیٹلائٹ سے لی گئی تصاویر میں دکھایا گیا ہے کہ چینی تعمیراتی کارکن ایک بھاری کرین کا استعمال کرتے ہوئے پل کے ستونوں کو کنکریٹ کے سلیب سے جوڑنے میں مدد کر رہے ہیں۔ راہل گاندھی نے اپنے ٹوئٹ میں اس پل کا ذکر کیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔