چندریان-2: زمین کے مدار سے باہر نکلا، 6 دن بعد چاند کے مدار میں ہوگا داخل

اِسرو کے چیئرمین کے. سیون کے مطابق 6 دنوں تک چاند کی طرف بڑھتے ہوئے چندریان 4.1 لاکھ کلو میٹر کی دوری طے کرے گا اور 20 اگست کو چاند کے مدار میں داخل ہوگا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

22 دنوں تک دنیا کے مدار میں رہنے کے بعد منگل کی دیر شب چندریان-2 بالآخر چاند کی طرف آگے بڑھ گیا ہے۔ ہندوستانی خلائی ریسرچ ادارہ اِسرو نے اس بات کی جانکاری دیتے ہوئے بتایا کہ چندریان-2 کو چاند کی راہ پر بھیجنے کے لیے ٹرانس لونر انجکشن نامی عمل کو کامیابی کے ساتھ مکمل کر لیا گیا ہے۔ اس دوران اسپیس کرافٹ کا لیکوئڈ انجن 1203 سیکنڈ کے لیے فائر کیا گیا، جس سے لانچنگ کے بعد 22 دن تک زمین کے مدار میں رہنے کے بعد چندریان-2 چاند کی جانب آگے بڑھ گیا۔

اِسرو کے چیئرمین کے. سیون کے مطابق 6 دنوں تک چاند کی طرف بڑھتے ہوئے چندریان 4.1 لاکھ کلو میٹر کی دوری طے کرے گا اور 20 اگست کو چاند کے مدار میں داخل ہوگا۔

اِسرو نے کہا کہ "اس کے ساتھ ہی چندریان-2 نے لونر ٹرانسفر ٹرانجیکٹری میں داخلہ پا لیا ہے۔ اس سے پہلے اسپیس کرافٹ کی آربٹ 23 جولائی سے 6 اگست 2019 کے درمیان پانچ گنا بڑھایا گیا تھا۔"

واضح رہے کہ چندریان کو پہلے 15 جولائی کو لانچ کیا جانا تھا لیکن کچھ تکنیکی خامی کے سبب اس کی لانچنگ کی تاریخ کو مزید آگے بڑھا دیا گیا تھا۔ اسرو کے سائنسدانوں نے لانچ سے کچھ گھنٹوں پہلے ہی چندریان میں تکنیکی خامی کا پتہ لگایا تھا۔ اس کے بعد 22 جولائی کو جی ایس ایل وی ایس کے-3 راکٹ کی مدد سے کامیابی کے ساتھ اس کی لانچنگ ہوئی تھی۔ لانچ کیے جانے کے بعد سے چندریان-2 کے سبھی سسٹم معمول کے مطابق کام کر رہے ہیں۔ لانچنگ کی تاریخ بدلنے کے باوجود بھی چندریان اپنی طے مدت 20 اگست 2019 کو چاند کے مدار میں داخل ہو جائے گا۔

Published: 14 Aug 2019, 5:10 PM