دہلی میں تھوکنا مہنگا پڑے گا

عوامی مقامات پر 1387لوگ تھوکتے ہوئے پکڑے گئے اور جنوب مغربی دہلی میں سب سے زیادہ 399لوگوں کے چالان ہوئے۔

 فائل علامتی تصویر یو این آئی
فائل علامتی تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

راجدھانی دہلی میں کورونا وبا کے دوران عوامی مقامات پر تھوکنے، ماسک نہیں لگانے اور سوشل ڈسٹینسنگ پر عمل نہ کرنے کے الزام میں 2,57,293لوگوں سے جرمانہ کے طورپر ساڑھے 41کروڑ روپے سے زیادہ کی رقم وصول کی گئی ہے۔

دہلی پولیس کے ذرائع نے جمعرات کو بتایا کہ 19اپریل سے 18اگست 2021تک 41,65,26,279روپے جرمانہ کے طورپر وصولے گئے۔ عوامی مقامات پر 1387لوگ تھوکتے ہوئے پکڑے گئے۔ جنوب مغربی دہلی میں سب سے زیادہ 399، جبکہ روہنی ضلع میں 229 اور اس کے بعد شمالی دہلی میں 217لوگوں کو ان کی تھوکنے کی عادتوں کی وجہ سے جرمانہ ادا کرنا پڑا۔


انہوں نے بتایا کہ راجدھانی کے جنوبی، مغربی، وسطی ضلع اور دہلی میٹرو اور اندرا گاندھی انٹرنیشنل ایئرپورٹ کے سرحدی علاقوں میں گزشتہ چار مہینہ میں ایک بھی شخص عوامی مقامات پر تھوکتا ہوا نہیں ملا۔ دوارکا میں 57، شمال مغربی دہلی 84، مشرقی دہلی 25، شمالی دہلی میں تین، شمال مشرقی دہلی میں 92، باہری دہلی 105، جنوب مشرقی دہلی 12، شاہدر ضلع اور دہلی کے ہندستانی ریلوے کے سرحدوں علاقوں میں محض دو دو اور باہری شمالی دہلی میں 160لوگوں کو تھوکنے کے لئے جرمانہ دینا پڑا۔

حالانکہ ماسک نہیں پہننے کے لئے سب سے زیادہ 2,27,833اور سوشل ڈسٹینسنگ پر عمل نہیں کرنے پر 28,073لوگوں کے چالان کئے گئے۔


خیال رہے کہ کورونا وبا کے پھیلاو کو روکنے کے لئے مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی طرف سے جاری کووڈ گائڈلائنس کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف 2000روپے تک کے جرمانہ کا التزام ہے۔ بسوں اور دہلی میٹرو میں بغیر ماسک سفر کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ میٹرو کے علاوہ بسوں میں بھی سیٹوں کی گنجائش سے زیادہ لوگوں کو سفر کرنے کی اجازت نہیں ہے۔ بس اڈہ، ریلوے اسٹیشنوں سمیت تمام عوامی مقامات پر کووڈ سے متعلق گائڈلائنس پر عملدآمد کرانے کی کوشش کی جارہی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔