شاہین باغ مظاہر میں ’خودکش حملہ آور‘ بنائے جا رہے ہیں: گری راج سنگھ کا متنازعہ بیان

دہلی میں انتخابی مہم کے دوران بی جے پی لیڈروں کے متنازعہ بیانات کا دور جاری ہے، اب گری راج سنگھ نے شاہین باغ کو ’خودکش حملہ آور‘ بنانے کا اڈہ بتایا ہے، انہوں نے کہا کہ وہاں ملک کے خلاف سازش ہو رہی ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

مرکزی وزیر اور بی جے پی رہنما گری راج سنگھ نے شاہین باغ میں ہو رہے شہریت ترمیمی قانون کے خلاف مظاہرہ پر متنازعہ بیان دیا ہے، انہوں نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ اب یہ تحریک نہیں رہی، وہاں خودکش حملہ آور بنائے جا رہے ہہں، شاہین باغ اب صرف تحریک نہیں رہ گئی ہے، بلکہ یہاں خودکش حملہ آوروں کا ایک گروہ بنایا جا رہا ہے، ملک کی دارالحکومت میں ملک کے خلاف سازش ہو رہی ہے۔

معاملہ طول پکڑنے کے بعد گری راج سنگھ نے صفائی دیتے ہوئے کہا کہ شاہین باغ میں ایک خاتون کا بچہ سردی سے مر جاتا ہے اور وہ عورت کہتی ہے کہ میرا بیٹا شہید ہوگیا، خودکش حملہ آور نہیں ہے تو کیا ہے؟ اگر ہندوستان کو بچانا ہے تو ان خودکش حملہ آور اور خلافت تحریک سے ملک کو چوکنا رہنا ہوگا۔

اس سے پہلے شہریت ترمیمی قانون کو لے کر ملک بھر میں چل رہی مخالفت پر گری راج سنگھ کا متنازعہ بیان سامنے آیا تھا۔ انہوں نے اپوزیشن پر الزام لگایا تھا کہ وہ پاکستان پرست ہیں وہ صرف روہنگیا مسلمانوں اور پاکستانی مسلمانوں کو شہریت دینا چاہتی ہے۔

بتا دیں کہ گزشتہ روز بدھ کو لوک سبھا میں بی جے پی کے رہنما تیجسوی سوریہ نے کہا تھا کہ دہلی کے شاہین باغ میں آج جو کچھ ہو رہا ہے، وہ اس بات کی یاد دلاتی ہے کہ اگر اس ملک کا اکثریتی طبقہ محتاط نہیں رہا اور محب وطن ہندوستانی نے کھل کر ساتھ نہیں دیا تو تو وہ دن دور نہیں جب دہلی میں مغل راج ہوگا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔