مودی کا دماغ مسلمانوں کے خلاف لیکن سی اے اے ہر ہندوستانی کے خلاف، اروندھتی رائے

یہ قانون بنیادی طور پر غریب عوام کے خلاف ہے اورآسام میں این آر سی کی وجہ سے لاکھوں لوگوں کی شہریت پر سوال کھڑے ہو گئے ہیں ۔

سوشل میڈیا 
سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

جے پور کے شاہین باغ کے نام سے مشہور شہید ی یادگار پر شہریت ترمیمی قانون اور مجوزہ این آر سی کے خلاف مظاہرہ کر رہے لوگوں سے خطاب کرتے ہوئے عالمی شہرت یافتہ مصنفہ اروندھتی رائے نے کہا کہ مودی حکومت کا دماغ صرف مسلمانوں کے خلاف کام کرتا ہے لیکن شہریت ترمیمی قانون اور مجوزہ این آر سی کا پورا عمل ہر ہندوستانی عوام کے خلاف ہے ۔

مظاہرین سے اپنے تجربات کو شئیر کرتے ہوئے اروندتھی رائے نے کہا کہ انہوں نے خود آسام کا حال دیکھا ہے ، وہاں بی جے پی حکومت نے یہ سوچ کر سی اے اے لاگو کیا کہ یہ وہاں کے مسلمانوں کے خلاف ہے لیکن آخر میں وہ وہاں کے غیر مسلموں کے خلاف ثابت ہوا ۔ انہوں نے کہا یہ قانون بنیادی طور پر غریب عوام کے خلاف ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آخر میں این آر سی کی وجہ سے لاکھوں لوگوں کی شہریت پر سوال کھڑے ہو گئے ہیں ۔

اس موقع پر اروندتھی نے مظاہرین کے حوصلہ اور جزبہ کی زبردست تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ان کے مظاہرہ کی آواز پورے عالم میں گونج رہی ہے۔ رائے نے کہا ’’ہمیں منٹوں کے اندر ایک دوسرے کی مدد کے لئے جمع ہو جانا چاہئے ۔ اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہم ہمیشہ سڑکوں پر ہی جمع رہیں لیکن ہمارا دماغ سڑک پر ہونا چاہئے ۔آپ جب صرف اپنے لئے لڑتے ہیں تو وہ انصاف کی لڑائی نہیں ہوتی بلکہ جب آپ دوسروں کے لئے لڑتے ہیں تب وہ انصاف کی لڑائی ہوتی ہے ۔‘‘

بی جے پی کی ٹرول آرمی اور میڈیا چینل کے ان دعووں کو خارج کرتے ہوئے کہ سی اے اے اور این آر سی کے خلاف صرف مسلمان احتجاج کر رہے ہیں اروندھتی رائے نے کہا کہ’’ ایسا بالکل نہیں ہے اس قانون کے خلاف ہندو، مسلمان، سکھ ،عیسائی سب ایک ساتھ کھڑے ہیں اور سب ایک دوسرے کے لئے لڑ رہے ہیں۔‘‘