بجٹ اجلاس: صدر نے سی اے اے کو بتایا حکومت کی اہم کامیابی، حزب اختلاف کا ہنگامہ

صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے اپنے خطاب کے دوران شہریت ترمیمی قانون کو مودی حکومت کی اہم کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح سے حکومت نے مہاتما گاندھی کے خوابوں کو پایہ تکمیل تک پہنچایا ہے

تصویر یو این آئی
تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: بجٹ اجلاس سے قبل صدر رام ناتھ کووند نے پارلیمنٹ کے مرکزی ہال میں ممبران پارلیمنٹ سے خطاب کیا۔ اس دروان انہوں نے شہریت ترمیمی قانون کو مودی حکومت کی اہم کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح سے حکومت نے مہاتما گاندھی کے خوابوں کو پایہ تکمیل تک پہنچایا ہے۔

صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے اپنے خطاب کے دوران شہریت ترمیمی قانون کا ذکر کیا تو برسر اقتدار نے میز بجا کر اس کا استقبال کیا جس سے مرکزی ہال کی گونج اٹھا اور صدر کو اپنے خطاب کے دوران کچھ دیر کےلئے رکنا پڑا لیکن اپوزیشن نے اس کی مخالفت کی جس کی وجہ سے خطاب میں رخنہ پڑا۔

کووند نے پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن کے پہلے دن دونوں ایوانوں کی مشترکہ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے صدر بابائے قوم مہاتما گاندھی کو یاد کیا اور پارلیمنٹ میں پچھلے دنوں پاس شہریت ترمیمی قانون کا ذکر کیا جس میں پاکستان، افغانستان اور بنگلہ دیش میں مذہبی استحصال کی وجہ سے 31دسمبر 2014 تک ہندوستان آئے ہندو،سکھ،جین،بودھ،عیسائی اور پارسی طبقے کے لوگوں کو شہریت دینے کا التزام ہے۔

ویڈیو گریب
ویڈیو گریب

اس کے ذکر پر وزیراعظم نریندرمودی سمیت پوری برسراقتدار پارٹی نے دو بار زوردار طریقے سے میز تھتھپاکر خیر مقدم کیا۔ تقریباً ڈیڑھ منٹ تک مرکزی ہال میں ان کے میز تھپتھپانے کا شور گونجتا رہا۔ اس وجہ سے صدر کو تین بار رکنا پڑا۔ اس پر اپوزیشن نے احتجاج کے طورپر شور مچایا جس کی وجہ سے ایک بار پھر خطاب میں رخنہ پڑا۔

قبل ازیں، وزیراعظم نریندرمودی نے جمعہ کو امید ظاہر کی کہ پارلیمنٹ کا آج سے بجٹ اجلاس شروع ہورہا ہے جو ملک کے روزشن مستقبل کی بنیاد ڈالنے والا ہوگا اور ان کی حکومت کا زور دلتوں،محروموں،خواتین کے بااختیار بنانے پر ہوگا۔

تصویر یو این آئی
تصویر یو این آئی

مودی نے یہاں پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں نامہ نگاروں سے کہا ’’یہ اس سال کا اور اس دہائی کا پہلا اجلاس ہے۔ ہماری کوشش رہنی چاہئے کہ اجلاس دہائی ملک کے روشن مستقبل کےلئے مضبوط بنیاد ڈالنے والا اجلاس بنا رہے۔ہماری حکومت نے اب تک دلتوں، مظلوموں، محروموں اور خواتین کو بااختیار بنانے کی سمت کام کیا ہےاور اس دہائی میں بھی ہماری یہی کوشش رہے گی۔‘‘

انہوں نے کہا کہ اس اجلاس میں زیادہ سے زیادہ اقتصادی موضوعات پر بحث ہوگی۔یہ یقینی بنایا جانا چاہئے کہ عالمی اقتصادی حالات کا ہندوستان کس طرح فائدہ اٹھا سکتا ہے،موجودہ عالمی صورت حال کا فائدہ ہندوستان کو کیسے مل سکے۔ وزیراعظم نے کہا کہ پارلیمنٹ کے دونوں اجلاس میں لوگوں کو اقتصادی طورپر بااختیار بنانے پر وسیع بحث ہونی چاہئے۔

next