شہروں سے پہلے نقوی، شاہنواز اور محسن رضا کا نام بدلا جائے: بی جے پی وزیر

اوم پرکاش راجبھر کا کہنا ہے کہ مسلمانوں نے ملک کو بہت کچھ دیا ہے جسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ انھوں نے مزید کہا کہ شہروں کا نام بدلے جانے سے پہلے بی جے پی کو اپنے مسلم لیڈروں کا نام بدلنا چاہیے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کی قیادت میں ریاست کے کچھ بڑے شہروں کا نام بدلا جا چکا ہے اور کئی مقامات کے نام بدلے جانے پر غور و خوض ہو رہا ہے۔ شہروں کا نام بدلے جانے سے اپوزیشن پارٹی کے لیڈران تو اپنی ناراضگی ظاہر کر ہی رہے ہیں، اب بی جے پی وزیر بھی اس سے خوش نظر نہیں آ رہے۔ یوگی کابینہ میں وزیر اوم پرکاش راجبھر نے ریاستی حکومت کو اس کے لیے تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر مغلوں کے نام پر رکھے گئے شہروں کا نام بدلا جا رہا ہے تو پھر سب سے پہلے بی جے پی کے ان مسلم لیڈروں کا نام بدلا جانا چاہیے جو ابھی پارٹی کے مسلم چہرہ بنے ہوئے ہیں۔

دراصل راجبھر نے ایک خبر رساں ایجنسی سے بات چیت کے دوران اپنے یہ نظریہ بیان کیا۔ انھوں نے کہا کہ ’’بی جے پی کے قومی ترجمان شاہنواز حسین اور مرکزی وزیر مختار عباس نقوی کے علاوہ یو پی کابینہ میں وزیر محسن رضا، یہ پارٹی کے تین مسلم چہرے ہیں، پہلے ان کا نام بدلا جائے۔‘‘ ساتھ انھوں نے کہا کہ جب بھی وہ پسماندہ اور مظلوم طبقہ کے لوگوں کے افسران کے لیے آواز اٹھاتے ہیں تب توجہ بھٹکانے کے لیے اس طرح کے ایشوز اٹھائے جاتے ہیں۔

اوم پرکاش راجبھر نے مسلمانوں کے ذریعہ ملک کے لیے دی گئی قربانیوں کا بھی میڈیا کے سامنے اعتراف کیا۔ انھوں نے کہا کہ جو کچھ مسلمانوں نے دیا وہ کسی اور نے نہیں دیا۔ راجبھر نے سوال کیا کہ ’’کیا ہمیں جی ٹی روڈ کو اکھاڑ پھینکنا چاہیے؟ تاج محل کس نے بنوایا؟ لال قلعہ کس نے بنوایا؟‘‘

قابل ذکر ہے کہ وزیر اعلیٰ یوگی نے گزشتہ دنوں فیض آباد ضلع کا نام ایودھیا کرنے کا اعلان کیا تھا۔ اس سے قبل انھوں نے الٰہ آباد ضلع کا نام بدل کر پریاگ راج کرنے کا اعلان کیا تھا۔ مغل سرائے اسٹیشن کا نام بھی یوگی حکومت میں دین دیال اپادھیائے جنکشن کر دیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 10 Nov 2018, 3:09 PM