بابری مسجد معاملہ: عاجز آ چکے ’باشندگان ایودھیا‘ کی نظریں سپریم کورٹ کے فیصلہ پر

ایودھیا میں مندر مسجد تنازعہ کی وجہ مسلسل نت نئی ہونے والی اتھل پتھل سے عاجز آ چکے باشندگان ایودھیا کو اب سپریم کورٹ کی جانب سے سنہری کرنیں دکھائی پڑ رہی ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

ایودھیا: ایودھیا میں مندر مسجد تنازعہ کی وجہ مسلسل نت نئے ہونے والے اتھل پتھل سے عاجز آ چکے باشندگان ایودھیا کو اب سپریم کورٹ کی جانب سے سنہری کرنیں دکھائی پڑ رہی ہے۔ ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے اس مسئلے کو لے کر اٹھنے والے مسائل سے تنگ یہاں کے لوگوں کا خیال ہے کہ اس تنازعہ کا حل اب جلد ہو جائے گا۔ باشندگان ایودھيا کی زندگی میں جلد ہی رونق بھی آنی شروع ہو جائے گی۔ عام نقل و حرکت پر پابندی، ٹھپ کاروبار، كرفیو کا ہمیشہ خدشہ اور کبھی بھی کسی انہونی ہونے کا خوف یہاں کے لوگوں کی عادت سی بن گئی ہے۔

یہاں کے ہندو ہوں یا مسلمان مذہب، دھرم فرقہ سے اوپر اٹھ کر ایک بار پھر وہ امن چین کی ویسی ہی زندگی جینا چاہتے ہیں جیسا سالوں پہلے یہاں ہوا کرتی تھی۔ ایودھیا میں رہنے والے ہندو مسلم باشندوں نے ایک سر میں کہا کہ مندر مسجد تنازعہ کا جو بھی سپریم کورٹ فیصلہ دے گا وہ سب کو تسلیم ہو گا۔

بابری مسجد پر فیصلہ سے قبل ایودھیا میں سخت حفاظتی انتظامات کئے گیے ہیں / تصویر یو این آئی
بابری مسجد پر فیصلہ سے قبل ایودھیا میں سخت حفاظتی انتظامات کئے گیے ہیں / تصویر یو این آئی

ایودھیا میں فیصلے سے پہلے شہر میں امن کا ماحول ہے۔ لوگوں کے ذہنوں میں اس کو لے کر طرح طرح کے خدشات ہیں۔ انہیں یہ فکر ستا رہی ہے کہ تمام تنظیموں کی تیاری کے چلتے ان کی عام زندگی متاثر نہ ہو جائے۔ کسی کو فیصلے کے بعد ماحول خراب ہونے کا ڈر ہے اور وہ اپنے خاندان کی حفاظت میں لگا ہے اور وہیں کسی کو اس کے گھر میں ہونے والی شادیوں کی فکر ہے۔

ہندو تنظیموں کی جانب سے رام مندر تعمیر کے حوالہ سے پتھر تراشی کا کام تقریباً مکمل کیا جا چکا ہے / تصویر یو این آئی
ہندو تنظیموں کی جانب سے رام مندر تعمیر کے حوالہ سے پتھر تراشی کا کام تقریباً مکمل کیا جا چکا ہے / تصویر یو این آئی

کچھ لوگوں نے کھانے پینے اور دیگر اشیاء جمع کرنا شروع کر دیا ہے۔ ادھر ضلع انتظامیہ کی جانب سے باشندگان ایودھيا کو یقین دلایا گیا ہے کہ پریشان ہونے یا گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔

ضلع مجسٹریٹ انوج کمار جھا نے کہا کہ کچھ لوگوں کی طرف سے خدشات کا اظہار کیا جا رہا ہے کہ شادیاں نہیں ہو پائیں گی۔ سب کو یقین دلایا جاتا ہے کہ ذاتی پروگراموں میں کوئی رکاوٹ آنے نہیں دی جائے گی۔ ایودھیا میں دفعہ 144 نافذ ہے۔ انتظامیہ نے آنے والی کارتک پورنما اشنان کے علاوہ یاتریوں کا ٹریفک، اسکول، ہسپتال وغیرہ کے آپریشن کو آسان رکھنے کی تیاری کر لی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایودھیا میں زندگی نارمل ہے اور انتظامیہ کی پوری کوشش ہے کہ حالات معمول پر ہی رہے۔ کسی بھی صورت حال میں لوگوں کو پریشان کئے بغیر افراتفری سے نمٹنے کا انتظام کیا گیا ہے۔

Published: 8 Nov 2019, 6:52 PM