اسمبلی انتخابات: پسماندہ طبقات کو اپنی جانب مائل کرنے کے لئے سماجوادی پارٹی کی نئی حکمت عملی

راج پال کشیپ اسمبلی حلقہ وار کارکن سمیلن کر رہے ہیں، ساتھ ہی وہ انتہائی پسماندہ سماج کے کارکنان کے گھر بھی جا رہے ہیں۔ مہم کے ذریعہ ذات کے اعتبار سے متعلقہ اسمبلی حلقے کی نبض بھی ٹٹول رہے ہیں۔

سماجوادی پارٹی، تصویر آئی اے این ایس
سماجوادی پارٹی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

لکھنؤ:: سماجوادی پارٹی (ایس پی) نے پسماندہ اور انتہائی پسماندہ ذاتیوں کو اپنی جانب مائل کرنے کے لئے نئی حکمت عملی بنائی ہے۔ اس کے تحت ریاست کو چار حصوں میں تقسیم کرکے مہم شروع کی گئی ہے۔ اس کی کمان پسماندہ سماج مورچہ کے ریاستی صدر و قانون ساز اسمبلی کے رکن راج پال کشیپ نے سنبھالی ہے۔

راج پال کشیپ اسمبلی حلقہ وار کارکن سمیلن کر رہے ہیں۔ ساتھ ہی وہ انتہائی پسماندہ سماج کے کارکنان کے گھر بھی جا رہے ہیں۔ مہم کے ذریعہ ذات کے اعتبار سے گول بندی کے ساتھ متعلقہ اسمبلی حلقے کی نبض بھی ٹٹول رہے ہیں۔ اس کی شروعات پورانچل سے کی ہے۔


ایس پی پسماندہ طبقات کو اپنا بنیادی ووٹ بینک مانتی ہے۔ لیکن اپوزیشن پارٹیاں مسلم یادو کو چھوڑ دیگر برادریوں میں کسی نہ کسی طور سے سیندھ ماری میں کامیاب ہوجاتی ہیں۔ اسمبلی و لوک سبھا انتخابات میں ہار کے بعد ہوئے جائزہ میں یہ بات سامنے آئی کہ انتہائی پسماندہ طبقات کا ووٹ بینک پارٹی کے حصے میں نہیں آیا تھا ایسے میں انتخابی موسم شروع ہونے سے پہلے ہی اس بار ان برادریوں کی گول بندی شروع ہوگئی ہے۔

ایس پی نے پسماندہ اور انتہائی پسماندہ طبقات کو لام بند کر نے کے لئے مہم شروع کی ہے۔ اس میں اسمبلی حلقوں کے اعتبار سے انتہائی پسماندہ طبقات پر خصوصی توجہ دی جاری ہے۔ اسی بنیاد پر تنظیم میں بھی شراکت داری کو بڑھایا جا رہا ہے۔ راج پال کشیپ سلطانپور،جونپور، غازی پور، چندولی میں اسمبلی کے اعتبار سے سمیلن کرچکے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔