انیل دیشمکھ کو دوبارہ ای ڈی کی حراست میں بھیجا گیا

جج جسٹس ایم جے جامدار نے اتوار کو ای ڈی کی طرف سے داخل کی گئی عرضی کے جواب میں ایک حکم جاری کیا، جس میں ہفتے کے روز خصوصی عدالت کے جج پی آر سیترے کے فیصلے کو چیلنج کیا گیا تھا۔

مہاراشٹر کے سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ/ آئی اے این ایس
مہاراشٹر کے سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ/ آئی اے این ایس
user

یو این آئی

ممبئی: بامبے ہائی کورٹ نے اتوار کے روز مہاراشٹر کے سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ کو 14 دن کی عدالتی حراست میں بھیجنے کے خصوصی پی ایم ایل اے عدالت کے حکم کو مسترد کرتے ہوئے انہیں پانچ دن کی انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی حراست میں بھیج دیا۔

تعطیلاتی بنچ کے جج جسٹس ایم جے جامدار نے اتوار کو ای ڈی کی طرف سے داخل کی گئی عرضی کے جواب میں ایک حکم جاری کیا، جس میں ہفتے کے روز خصوصی عدالت کے جج پی آر سیترے کے فیصلے کو چیلنج کیا گیا تھا۔ ای ڈی نے خصوصی عدالت کے سامنے دائرعرضی میں انیل دیشمکھ کی حراست میں مزید نو دن کی توسیع کی درخواست کی تھی، جسے عدالت نے مسترد کر دیا۔


انیل دیشمکھ کے وکیل سینئر ایڈوکیٹ وکرم چودھری اور انیکیت نکم نے عدالت کو بتایا کہ ای ڈی کی درخواست کی اہلیت اورصداقت جانے بغیر وہ اپنی مرضی سے تعاون کر رہے ہیں۔ انہوں نے جانچ میں مدد کی ہے اور انہیں آگے کی ریمانڈ پر بھی کوئی اعتراض نہیں ہے۔ ای ڈی کے وکیل ایڈیشنل سالیسیٹر جنرل انیل سنگھ اور ایڈوکیٹ شری رام شرسات نے بامبے ہائی کورٹ کو بتایا کہ انہیں خصوصی پی ایم ایل اے عدالت کی طرف سے حراست میں توسیع کی اجازت نہیں دی گئی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔