امر سنگھ اب نہیں رہے، انتقال سے 3 گھنٹے قبل دی تھی عید الضحی کی مبارک باد

امر سنگھ نے موت سے قبل دو ٹوئٹ کیے تھے، انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں عوام کو عید الاضحیٰ کی مبارکباد دی تھی، ایک دیگر ٹوئٹ میں انہوں نے لوک مانیہ تلک بال گنگا دھر تلک کی برسی پر انھیں خراج عقیدت پیش کیا تھا

امر سنگھ، تصویر گیٹی ایمج
امر سنگھ، تصویر گیٹی ایمج
user

یو این آئی

نئی دہلی: راجیہ سبھا رکن اور سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے سابق جنرل سکریٹری امر سنگھ کا آج انتقال ہو گیا۔ وہ 64 برس کے تھے۔ ان کے اہل خانہ میں بیوی اور دو بیٹیاں ہیں۔ امر سنگھ گردے کے مرض میں مبتلا تھے اور چھ ماہ سے زیادہ وقت سے سنگا پور میں ان کا علاج چل رہا تھا۔

رکن پارلیمنٹ کا دوسری دفعہ کڈنی ٹرانسپلانٹ ہوا تھا حالانکہ آپریشن کامیاب ہوا تھا اور ان کی طبیعت بہتر ہو رہی تھی لیکن وائرس ہونے سے ان کی طبیعت زیادہ بگڑتی چلی گئی۔ ڈاکٹروں نے امر سنگھ کو بچانے کی مکمل کوشش کی، لیکن وہ ناکام رہے۔

امر سنگھ نے موت سے قبل دو ٹوئٹ کیے تھے۔ انہوں نے اپنے ٹویٹ میں عوام کو عید الاضحیٰ کی مبارکباد دی تھی۔ ایک دیگر ٹوئٹ میں انہوں نے لوک مانیہ تلک بال گنگا دھر تلک کی برسی پر انھیں خراج عقیدت پیش کیا تھا۔ وہ 27 جنوری 1956 کو اترپردیش کے ضلع اعظم گڑھ میں پیدا ہوئے۔ وہ ایس پی کے بانی اور اترپردیش کے سابق وزیر اعلیٰ ملائم سنگھ یادو کے بے حد قریبی تھے۔ وہ میگا اسٹار امیتابھ بچن کے بھی بے حد قریبی تھے لیکن بعد ازاں دونوں کے درمیان تعلقات کشیدہ ہو گئے۔

امر سنگھ نے 2010 میں ایس پی کے جنرل سکریٹری کے عہدے اور راجیہ سبھا سے استعفیٰ دے دیا تھا۔ بعد ازاں دو فروری 2010 کو ایس پی سپریمو ملائم سنگھ نے انھیں پارٹی سے نکال دیا تھا۔ وہ 2011 میں کچھ وقت جیل میں بھی رہے۔ کچھ وقت تک سیاست سے دور رہنے کے بعد امر سنگھ 2016 میں ایس پی کی حمایت سے پھر راجیہ سبھا کے رکن منتخب ہوئے، اسی سال اکتوبر میں انھیں دوبارہ ایس پی جنرل سکریٹری بنایا تھا۔

next