رائے بریلی: تحریکِ عدم اعتماد پر ہائی کورٹ نے چیف سکریٹری اور ضلع مجسٹریٹ سے کیا جواب طلب

ہائی کورٹ نے چیف سکریٹری اور رائے بریلی کے ضلع مجسٹریٹ کو حکم دیا ہے کہ وہ حلف نامہ داخل کر کے بتائں کہ ضلع پنچایت صدر کے خلاف لائی گئی تحریک پر ووٹنگ کرانے میں تاخیر کیوں کی؟

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

الہ آباد ہائی کورٹ نے رائے بریلی کے ضلع پنچایت صدر کے خلاف لائی گئی عدم اعتماد کی تحریک پر ووٹنگ کرانے میں تاخیر پر اتر پردیش کے چیف سکریٹری اور رائے بریلی کے ضلع مجسٹریٹ سے جواب طلب کیا ہے۔ ہائی کورٹ نے ان دو اعلیٰ افسران کو سات روز کے اندر اندر حلف نامہ داخل کرنے کی ہدایت دی ہے۔

ہائی کورٹ کے جسٹس رجنیش کمار اور جسٹس پنکج کمار کی بنچ نے جمعہ 17 مئی کو کانگریس کی رکن اسمبلی ادیتی سنگھ اور دیگر ضلع پنچایت ارکان کی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ انتظامیہ نے عدم اعتماد کی تحریک کے معاملہ میں دانشتہ طور پر تاخیر کی ہے۔

رائے بریلی: تحریکِ عدم اعتماد پر ہائی کورٹ نے چیف سکریٹری اور ضلع مجسٹریٹ سے کیا جواب طلب

غورطلب ہے کہ 14 مئی کو تحریک عدم اعتماد کی ووٹنگ کے لئے جاتے وقت رائے بریلی سے کانگریس کی رکن اسمبلی ادیتی سنگھ کے قافلہ پر فائرنگ کر کے ان پر قاتلانہ حملہ کیا گیا تھا۔ اس حملہ میں ادیتی سنگھ کی کار پلٹ گئی تھی اور وہ زخمی بھی ہوئی تھیں۔ اس کے علاوہ دیگر ضلع پنچایت ارکان پر بھی حملہ ہوا تھا اور کچھ کو اغوا بھی کر لیا گیا تھا، اس حوالہ سے نامزد رپورٹ درج کرائی گئی ہے۔ ایک ضلع پنچایت رکن کو گولی بھی لگی ہے۔

ہائی کورٹ نے اپنے حکم میں چیف سکریٹری اور ضلع مجسٹریٹ کو تنبیہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر سات دن کے اندر دونوں افسران حلف نامہ داخل نہیں کرتے ہیں تو ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی اور انہیں عدالت میں پیش ہونا پڑے گا۔

واضح رہے کہ رائے بریلی کے ضلع پنچایت صدر اودھیش سنگھ کے خلاف عدالتی حکم پر تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ ہونی تھی۔ یہاں یہ بات ذہن نشین کرنی ضروری ہے کہ اودھیش سنگھ رائے بریلی سے یو پی اے چیئر پرسن سونیا گاندھی کے خلاف بی جے پی کے ٹکٹ پر لوک سبھا انتخابات کے امیدوار دنیش پرتاپ سنگھ کے بھائی ہیں۔

ہائی کورٹ نے کہا کہ تحریک عدم اعتماد پر 14 مئی کو ووٹنگ ہونی تھی لیکن ضلع پنچایت صدر اودھیش سنگھ، ان کے بھائی اور ایم ایل سی دنیش سنگھ اور ہرچندپور سے رکن اسمبلی راکیش سنگھ کی وجہ سے اجلاس نہیں ہو پایا۔ ہائی کورٹ نے مزید کہا، ’’اودھیش سنگھ نے ضلع پنچایت ارکان کو ہال میں جانے سے روکا اور اس وجہ سے تحریک عدم اعتماد کے حوالہ سے اجلاس نہیں ہو پایا۔‘‘

عرضی گزاروں نے عدالت کو بتایا کہ کئی ضلع پنچایت ارکان کے خلاف مجرمانہ معاملات درج کر دیئے گئے اور ان میں سے کئی نے انتظامیہ کی کارروائی کے خلاف عدالت سے رجوع کیا ہے۔

اسی بنیاد پر عدالت نے کہا، ’’ان حقائق کی روشنی میں اتر پردیش کے چیف سکریٹری اور رائے بریلی کے ضلع مجسٹریٹ کو اپنا جواب داخل کرنا ہوگا۔ ‘‘

رائے بریلی: تحریکِ عدم اعتماد پر ہائی کورٹ نے چیف سکریٹری اور ضلع مجسٹریٹ سے کیا جواب طلب

ادیتی سنگھ پر حملہ کے 10 ملزمان گرفتار

کانگریس کی رکن اسمبلی ادیتی سنگھ اور دیگر ضلع پنچایت ارکان پر حملہ کے 48 گھنٹے کے بعد پولس نے کارروائی کرتے ہوئے 10 لوگوں کو حراست میں لیا ہے۔ پولس کے مطابق ملزمان کے قبضہ سے مبینہ طور پر استعمال کی گئی ایس یو وی گاڑی بھی برآمد کر لی گئی ہے۔

Published: 18 May 2019, 3:10 PM