کورونا کا مقابلہ تمام مذہب، ذات اور فرقے متحد ہو کر کر رہے ہیں: ادھو ٹھاکرے

ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ دوسری ریاستوں کے شہریوں کا بھی بھر پور خیال رکھا جا رہا ہے، انہیں گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ ہمیں سبھی مزدوروں، ملازمین اور دیگر پسماندہ طبقات کا خیال رکھنا ہوگا۔

تصویر سوشل میدیا
تصویر سوشل میدیا
user

قومی آوازبیورو

ممبئی: مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے کہا ہے کہ ریاست میں مذہب، ذات اور فرقے متحد ہو کر کورونا وائرس کا مقابلہ کریں گے، کیونکہ ان کا مذہب، فرقہ اور ذات کچھ بھی ہو وائرس ایک ہی ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ جس طرح متاثرین کی تعداد بڑھ رہی ہے، اسی طرح مریضوں کے صحت یاب ہونے کی خوش آئند خبریں ہیں۔

آج ریاست کے شہریوں سے خطاب کرتے ہوئے افواہ پھیلانے والوں کو سخت الفاظ میں وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ کسی کو معاشرے میں تفرقہ پھیلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ جعلی ویڈیو اور آڈیو بنانے والوں کو بخشا نہیں جائے گا، وزیراعلی نے اعلان کیا کہ ریاست میں کسی بھی طرح کی مذہبی تقریبات کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ جبکہ کھیل کود، سماجی اور ثقافتی پروگراموں پر پابندی عائد ہوگی۔

انہوں نے مریضوں اور مہلوکین کے اضافے پر تشویش جتائی اور کہا کہ متاثرین صحتیاب بھی ہو رہے ہیں۔ زیادہ ضیعف اور بچوں کا بھی خیال رکھا جائے گا۔ جبکہ سبھی مذاہب کے تہواروں کی تقریبات پر پابندی لگائی گئی ہے۔ جبکہ تبلیغی جماعت مرکز دہلی سے آئے سو افراد کو الگ تھلگ رکھا گیا ہے۔

ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ دوسری ریاستوں کے شہریوں کا بھی بھر پور خیال رکھا جا رہا ہے، انہیں گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ ہم سبھی کو مزدوروں، ملازمین اور دیگر پسماندہ طبقات کا خیال رکھنا ہوگا۔ ہمیں اعتماد ہے کہ کورونا کے خلاف لڑائی میں کامیابی حاصل کریں گے۔

ادھو ٹھاکرے نے شاہ رخ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے کوارنٹائن کے لیے جگہ دے دی ہے، تاج ہوٹل میں ڈاکٹروں کے قیام کی جگہ فراہم کی ہے۔