توانائی کے شعبہ میں ہندوستان اور امریکہ کے مابین معاہدہ

ہندوستان اور امریکی کمپنیوں کے درمیان توانائی کے شعبہ میں اتوار کو ایک معاہدہ ہوا۔ وزیر اعظم نریندر مودی بھی اس معاہدہ پر دستخط کے دوران موجود تھے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

ہیوسٹن: ہندوستان اور امریکی کمپنیوں کے درمیان توانائی کے شعبہ میں اتوار کو ایک معاہدہ ہوا۔ وزیر اعظم نریندر مودی بھی اس معاہدہ پر دستخط کے دوران موجود تھے۔ انہوں نے ٹوئٹ کرکے بتایا ’’ٹیلرين اور پیٹرونیٹ ایل این جی کے درمیان معاہدہ کی یادداشت پر دستخط کئے جانے کا گواہ بنا‘‘۔

ہندوستانی پٹرولیم کمپنی پیٹرونیٹ نے یہاں امریکہ کی قدرتی گیس (ایل این جی) کمپنی ٹیلرين سے 50 لاکھ ٹن ایل این جی سالانہ درآمد کرنے کے معاہدے پر دستخط کئے۔ وزیر اعظم نریندر مودی ہفتہ کو سات دن کے دورے پر امریکہ پهنچے۔ ان کے یہاں پہنچنے کے بعد وزارت خارجہ کے ترجمان رويش کمار نے ٹوئٹ کرکے بتایا کہ مودی نے توانائی کے شعبے کے ٹاپ چیف ایگزیکٹیو اہلکاروں کے ساتھ بامعنی ملاقات کی ہے۔


خیال رہے کہ پی ایم مودی ایک ہفتے کے امریکہ دورے پر ہیں ۔ ان کے ساتھ وزیر خارجہ ڈاکٹر ایس جے شنکر ، خارجہ سیکریٹری اجے گوکھلے اور امریکہ میں ہندوستان کے سفیر ہرش وردھن بھی یہاں آئے ہیں ۔ مودی نے اپنے پہلے ٹویٹ میں کہا ’’یہاں ہیوسٹن میں ایک روشن دوپہر ہے۔ اس محترک اور پر جوش شہر میں پروگراموں کے ایک وسیع سلسلے کا انتظار کر رہا ہوں‘‘۔

وہ آج ’هاؤڈي مودی ‘میگا ریلی میں حصہ لے رہے ہیں۔ اس پروگرام کو ٹرمپ کے بھی خطاب کرنے کی توقع ہے۔ وہ پیر کو اقوام متحدہ کی کلائی میٹ ایکشن سمٹ میں حصہ لیں گے اور 24 ستمبر کو امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ نیویارک میں دو طرفہ مذاکرات کریں گے۔ واضح رہے کہ مئی 2019 میں دوسری مرتبہ ملک کے وزیر اعظم بننے کے بعد مودی کا یہ پہلا امریکہ دورہ ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 22 Sep 2019, 11:10 AM