سیاسی حریفوں کو سبق سکھانے کے لئے ایجنسیوں کا استعمال: شیوسینا

سامنا اخبار میں لکھا ہے کہ کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے۔ لیکن، یہ بات اب واضح ہوگئی ہے کہ سیاسی حریفوں کو پامال کرنے کے لئے قانون اور مرکزی تفتیشی ایجنسیوں کا غلط استعمال کیا جا رہا ہے۔

سامنا تصویر ٹوئٹر Saamana@SaamanaOnline
سامنا تصویر ٹوئٹر Saamana@SaamanaOnline
user

یو این آئی

ممبئی: شیو سینا نے بدھ کے روز دعویٰ کیا ہے کہ سیاسی حریفوں کو سبق سکھانے اور ان سے بدلہ لینے کے ارادے سے فی الوقت ملک میں جو ماحول چل رہا ہے اس کے مطابق قانون اور مرکزی تفتیشی ایجنسیوں کا غلط استعمال کیا جا رہا ہے۔ پارٹی کے ترجمان اخبار 'سامنا' میں لکھے گئے اداریہ میں کہا گیا ہے کہ بامبے ہائی کورٹ نے سینئر پولیس آفیسر پرم بیر سنگھ کی جانب سے مہاراشٹر کے سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ کے خلاف بدعنوانی کے الزامات عائد کیے جانے والی عرضداشت کی سماعت کے دوران پرم بیر سنگھ کی سرزنش کی تھی، لیکن ایک خاتون وکیل جے شری پاٹل کی جانب سے دائر کردہ علحیدہ عرضداشت کی سماعت کرتے ہوئے عدالت نے دیشمکھ کے خلاف سی بی آئی تفشیش کو ہری جھنڈی دکھا دی گئی۔

سامنا اخبار میں مزید لکھا ہے کہ کوئی بھی قانون سے بالاتر نہیں ہے۔ لیکن، یہ بات اب واضح ہوگئی ہے کہ سیاسی حریفوں کو پامال کرنے کے لئے قانون اور مرکزی تفتیشی ایجنسیوں کا غلط استعمال کیا جا رہا ہے، "مراٹھی اخبار نے مزید دعوی کیا ہے کہ ریاست کی مہاوکاس اگھاڑی کے خلاف بھی بے بنیاد الزامات عائد کر کے آئینی اداروں اور مرکزی ایجنسیوں کا غلط استعمال کیا جا رہا ہے ۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔