حکومت پر تنقید کرنے والوں کو ’غدار وطن‘ کہا جا رہا ہے: شبانہ اعظمی

شبانہ اعظمی نے کہا کہ ہم گنگا-جمنی تہذیب میں پلے بڑھے ہیں، ہمیں ملک کے موجودہ حالات کے آگے گھٹنے نہیں ٹیکنے چاہیے، ہندوستان ایک خوبصورت ملک ہے، لوگوں کو بانٹنے کی کوشش ملک کے لئے صحیح نہیں ہو سکتی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

مودی حکومت میں اظہار رائے کی آزادی پر ملک میں منڈرا رہے خطرہ کے درمیان مشہور اداکارہ اور سماجی کارکن شبانہ اعظمی نے بڑا بیان دیا ہے، مدھیہ پردیش کے اندور میں ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت پر تنقید کرنے والے لوگوں کو غدار ملک کہا جا رہا ہے، انہوں نے کہا کہ ملک کی بہتری کے لئے یہ ضروری ہے کہ اس کی کوتاہیوں کو سامنے لایا جائے۔

شبانہ اعظمی نے کہا، ’’ملک کی اچھائی کے لئے یہ ضروری ہے کہ ہم اس کی برائیوں کو بھی بتائیں، اگر ہم برائیوں کو نہیں بتائیں گے تو حالات میں بہتری کس طرح لائیں گے؟ لیکن ملک میں ماحول اس طرح کا بن رہا ہے کہ اگر آپ نے خاص طور پر حکومت پر تنقید کی تو آپ کو فوری طور پر غدار ملک کہہ دیا جاتا ہے، ہمیں اس سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے، ان سرٹیفکیٹ کی کسی کو ضرورت نہیں ہے‘‘۔

مشہور اداکارہ نے کہا کہ ہم گنگا-جمنی تہذیب میں پلے بڑھے ہیں، ہمیں ملک کے موجودہ حالات کے آگے گھٹنے نہیں ٹیکنے چاہیے، شبانہ اعظمی نے فرقہ واریت کی شدید مخالفت کی۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ایک خوبصورت ملک ہے، لوگوں کو بانٹنے کی کوشش اس ملک کے لئے صحیح نہیں ہو سکتی ہے۔

شبانہ اعظمی نے کہا کہ فرقہ وارانہ فسادات سے سب سے زیادہ پریشانی خواتین کو ہوتی ہے، انہوں نے کہا کہ ’’فسادات سے ایک عورت کا گھر تباہ ہو جاتا ہے، اس کے بچے بے گھر ہو جاتے ہیں جس کے سبب وہ اسکول نہیں جا پاتے ہیں، ایسے میں فرقہ وارانہ فسادات کی سب سے زیادہ شکار خواتین ہی بنتی ہیں‘‘۔ خواتین کے مفاد میں بہتر کام کرنے کے لئے شبانہ اعظمی کو شہر کے انندموهن ماتھر چیریٹیبل ٹرسٹ کی جانب سے ’كنتی ماتھر‘ کے اعزاز سے نوازا گیا۔

Published: 7 Jul 2019, 1:32 PM
next