بہار میں مجرموں کا ڈیٹا بیس تیار ہوگا، ایک کلک میں دستیاب ہوگی مجرمانہ تاریخ

ویب سائٹ پر ڈالے جانے کے بعد مجرموں کا پورا پسِ منظر اور ان کی تفصیلات عوامی ہو جائے گی، جسے کوئی بھی تھانہ، پولیس کے اعلیٰ افسران یا ایس ٹی ایف کے افسران بھی فوری طور پر دیکھ سکیں گے

بہار پولیس
بہار پولیس
user

قومی آوازبیورو

پٹنہ: بہار میں اب کسی بھی تھانہ کی پولیس کو بدنامِ زمانہ مجرموں کی تفصیلات کے لئے زیادہ مشقت نہیں کرنا پڑے گی، کیونکہ محض ایک کلک پر تمام تفصیلات حاصل ہو جائیں گی۔ اسپیشل ٹاسک فورس (ایس ٹی ایف) اب تمام اضلاع کے ساتھ تال میل بنا کر مجرموں کا ڈیٹا بیس تیار کرا رہی ہے۔

بہار پولیس کا خیال ہے کہ مجرموں کی تفصیل حاصل کرنے یا ان کی گرفتاری کرنے کے لئے ضلع پولیس کو کافی مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ڈیٹا بیس تیار کرنے سے مجرموں کی شناخت فوری طور پر کی جا سکے گی اور اس کا مجرمانہ پسِ منظر ہاتھ میں ہوگا۔ اس سے منظم گروہوں پر لگام لگانے میں مدد ملے گی۔


ایس ٹی ایف کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ مجرموں کی تمام تفصیلات کا ڈیتا تیار کرانے کے بعد اسے ایک خصوصی ویب سائٹ پر اپلوڈ کر دیا جائے گا۔ ویب سائٹ پر ڈالے جانے کے بعد مجرموں کا پورا پسِ منظر اور ان کی تفصیلات عوامی ہو جائے گی، جسے کوئی بھی تھانہ، پولیس کے اعلیٰ افسران یا ایس ٹی ایف کے افسران بھی فوری طور پر دیکھ سکیں گے۔

افسران کا کہنا ہے کہ ریاست میں ایسے کئی مجرم ہین جن کی گرفتاری کے لئے ایس ٹی ایف کی جانب سے لگاتار کوشش کی جاتی رہی ہے اور مجرموں کی اطلاع متعلقہ اضلاع سے حاصل کرنا پڑتی ہے۔

ایس ٹی ایف کے مطابق اس کے بعد ایس ٹی ایف، ضلع پولیس سے بہتر تال میل قائم کر سکے گی اور مجرموں کا محاصرہ کیا جا سکے گا۔ افسران کا کہنا ہے کہ اس سے بینک لوٹ اور بڑی ڈکیتی کی واردات انجام دینے والے مجرموں پر شکنجہ کسنے میں مدد ملے گی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ بینک لوٹ کی واردات میں شامل ایک ہی مجرموں کے گروہ کئی اضلاع میں فعال ہوتے ہیں، جس کی شناخت کرنا مشکل ہوتی ہے۔ اس سال کے اواخر میں یا نئے سال کی شروعات میں اس ویب سائٹ کے پوری طرح سے تیار ہونے کا امکان ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔