’ڈرائیوروں کے لئے آٹھویں تک کی تعلیم ہونے کی شرط ختم‘

روڈ ٹرانسپورٹ اور شاہراہوں کے مرکزی وزیر نے کہا کہ کم تعلیم یافتہ لوگوں کو روزگار کے مواقع دستیاب کرانے کے لئے ڈرائیوروں کے لئے آٹھویں تک کی کم از کم تعلیمی اہلیت کی لازمیت کو ختم کر دیا گیا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

نئی دہلی: روڈٹرانسپورٹ اور شاہراہوں کے وزیر نتن گڈکری نے کہاکہ ملک میں کم تعلیم یافتہ لوگوں کو روزگار کے مواقع دستیاب کرانے کے لئے ڈرائیوروں کے لئے آٹھویں تک کی تعلیم کی کم از کم تعلیمی اہلیت کی لازمیت کو ختم کردیا گیا ہے۔

نتن گڈکری نے منگل کو ٹوئٹ کیا کہ سماج کے کم تعلیم یافتہ اور غریب لوگ ڈرائیونگ سے روزگار کے امکانات تلاش کرتے ہیں۔ حکومت نے ڈرائیونگ کا لائسنس لینے کے لئے آٹھویں تک کی تعلیم کی لازمیت ہٹا دی ہے جس سے تعلیم کی وجہ سے ان کا روزگار نہ رکے۔

انہوں نے کہا کہ ٹرانسپورٹ شعبہ میں 22لاکھ سے زیادہ ڈرائیوروں کی کمی ہے اور ڈرائیوروں کے لئے آٹھویں تک کی تعلیم لازمی شرط ختم کرکے لاکھوں لوگوں کی زندگی کو بہتر بنایا جاسکتا ہے۔ اس لئے اس لازمیت کو ختم کیا گیا ہے۔ یہ فیصلہ اقتصادی طورپر پسماندہ علاقوں کے ہنر مند لوگوں کو فائدہ پہنچانے کے لئے کیا گیا ہے لیکن سڑک پر حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے لائسنس دینے سے پہلے ڈرائیوروں کے لئے مناسب تربیت اور ڈرائیونگ کے سخت ٹیسٹ پر زور دیا گیا ہے۔

نتن گڈکری نے کہاکہ تعلیم کی وجہ سے ٹرانسپورٹ شعبہ میں لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع ختم نہیں ہونے دیئے جائیں گے اس لئے ڈرائیونگ لائسنس کے لئے آٹھویں تک کی کم از کم تعلیمی اہلیت کے التزام کو ہٹا دیا گیا ہے۔ کوئی شخص اگر ڈرائیونگ کا ٹیسٹ پاس کرلیتا ہے تو اسے لائسنس ضرور دیاجائے گا۔ ڈرائیونگ لائسنس مل جانے سے ملک میں مال دھلائی شعبہ میں 22 لاکھ لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔ اچھے ڈرائیور فراہم کرنے کے لئے پورے ملک میں دو لاکھ تربیتی مرکز کھولے جائیں گے۔