اومیکرون ڈیلٹا سے 3 گنا زیادہ متعدی، احتیاطی تدابیر اختیار کریں: مرکز کی ریاستوں کے لئے رہنما ہدایات

مرکز کی رہنما ہدایات ایسے وقت میں جارزی کی گئی ہیں جب ملک میں اومیکرون کے معاملات 200 سے تجاوز کر چکے ہیں، بڑے شہروں میں کرسمس اور نئے سال پر بھیڑ کم جمع ہو اس کے لیے مختلف اقدامات کیے جا رہے ہیں

اومیکرون، تصویر آئی اے این ایس
اومیکرون، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کورونا کا نیا ویرینٹ اومیکرون پہلے دریافت ہونے والے ڈیلٹا ویرینٹ سے تین گنا زیادہ متعدی ثابت ہوا ہے یعنی اس کے پھیلنے کے امکانات ڈیلٹا ویرینٹ سے تین گنا زیادہ ہیں۔ مرکزی حکومت نے ریاستوں کو اومیکرن کے تئیں آگاہ کرتے ہوئے احتیاطی اقدامات لینے کی صلاح دی گئی ہے۔ چنئی، ممبئی جیسے کئی بڑے شہروں میں کرسمس اور نئے سال کے جشن کے پیش نظر بھیڑ کم جمع ہوں اس کے لیے مختلف اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

مرکز نے اس سلسلے میں ریاستوں کو خط لکھا تھا۔ خط کے مطابق ڈیلٹا ویرینٹ ملک کے مختلف حصوں میں پہنچ چکا ہے۔ اس لیے دور اندیشی کو اپناتے ہوئے مقامی اور ضلعی سطح پر وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے سے متعلق قوانین پر سختی سے عمل کیا جائے۔ یہ بھی مشورہ دیا گیا ہے کہ وائرس کے رجحانات اور انفیکشن کی جگہوں سے متعلق ڈیٹا کا باریک بینی سے جائزہ لیا جائے۔


کرناٹک ریاست میں 30 دسمبر سے 2 جنوری تک کسی بھی پارٹی یا پروگرام کی اجازت نہیں ہوگی۔ وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے کہا ہے کہ کووڈ-19 اور اومیکرون کے ویرینٹ کو ذہن میں رکھتے ہوئے نئے سال کے جشن کے سلسلے میں کئی پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔ چنئی نے مقامی ایجنسیوں کو ساحلوں پر بھیڑ جمع ہونے سے روکنے کے لیے مختلف احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔

بی ایم سی نے ممبئی میں لوگوں سے کرسمس اور نئے سال کی پارٹیوں سے گریز کرنے کی اپیل کی ہے۔ عوام سے کہا گیا ہے کہ وہ شادی بیاہ اور دیگر تقریبات میں شرکت کے حوالے سے قوانین پر سختی سے عمل کریں۔ لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ زیادہ ہجوم سے گریز کریں۔ ہوٹلوں، ریستوراں، مالز، بارز اور دیگر عوامی مقامات سے کہا گیا ہے کہ وہ بھیڑ کو کنٹرول کرنے کے لیے کووڈ پروٹوکول پر سختی سے عمل کریں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔