پلوامہ تصادم میں جیش سے وابستہ 3 ملی ٹنٹ ہلاک، امریکی ساخت کی دو رائفلیں ضبط : آئی جی کشمیر

کشمیر زون پولیس نے انسپکٹر جنرل وجے کمار کے حوالے سے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ جنوبی ضلع پلوامہ کے چند گام علاقے میں درمیانی شب کو ہوئے ایک تصادم میں جیش سے وابستہ تین ملی ٹنٹ ہلاک ہوئے ہیں۔

انسپکٹر جنرل وجے کمار، تصویر یو این آئی
انسپکٹر جنرل وجے کمار، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

سری نگر: جنوبی ضلع پلوامہ کے چند گام علاقے میں سیکورٹی فورسز اور ملی ٹنٹوں کے مابین تصادم آرائی میں جیش سے وابستہ 3 ملی ٹنٹ جاں بحق ہوئے ہیں، کشمیر زون پولیس کے انسپکٹر جنرل وجے کمار کا کہنا ہے کہ ضلع پلوامہ کے چند گام علاقے میں شبانہ تصادم آرائی کے دوران جیش سے وابستہ غیر ملکی ملی ٹنٹ سمیت 3 ملی ٹینٹ مارے گئے۔

پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ حفاظتی عملے کو یہ اطلاع موصول ہوئی کہ ملی ٹینٹ جنوبی ضلع پلوامہ کے چند گام علاقے میں چھپے بیٹھے ہیں تو پولیس اور سیکورٹی فورسز نے منگل اور بدھ کی درمیانی شب کو مشترکہ طور پر فوراً اس علاقے کو محاصرے میں لے لیا اور اُنہیں ڈھونڈ نکالنے کے لئے کارروائی شروع کی۔


اُنہوں نے کہا کہ فرار ہونے کے تمام راستے مسدود پا کر ملی ٹنٹوں نے حفاظتی عملے پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی، چنانچہ سلامتی عملے نے بھی پوزیشن سنبھال کر جوابی کارروائی کا آغاز کیا اور اس طرح سے طرفین کے مابین جھڑپ شروع ہوئی۔ پولیس ترجمان کے مطابق کچھ عرصہ تک جاری رہنے والی اس جھڑپ میں تین ملی ٹینٹ ہلاک ہوئے۔

اُنہوں نے کہا کہ جھڑپ کی جگہ مہلوک ملی ٹینٹوں کی لاشیں برآمد کرکے اُن کی شناخت اور تنظیمی وابستگی کے سلسلے میں کارروائی شروع کی گئی ہے۔ اُن کے مطابق تصادم کی جگہ اسلحہ و گولہ بارود اور قابل اعتراض مواد برآمد کرکے ضبط کیا گیا ہے۔


دریں اثنا کشمیر زون پولیس نے انسپکٹر جنرل وجے کمار کے حوالے سے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ ’جنوبی ضلع پلوامہ کے چند گام علاقے میں درمیانی شب کو ہوئے ایک تصادم میں جیش سے وابستہ تین ملی ٹنٹ ہلاک ہوئے ہیں‘۔

انہوں نے کہا کہ مہلوک ملی ٹینٹوں کے قبضے سے امریکی ساخت کی 2 رائفلیں اور دوسرا قابل اعتراض مواد برآمد کرکے ضبط کیا گیا۔ علاقے میں آپریشن ہنوز جاری ہے۔ بتادیں کہ سال نو یکم جنوری سے لے کر 5 جنوری تک سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم آرائیوں میں ایک درانداز سمیت نو ملی ٹینٹ ہلاک ہوئے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔