ریستوراں میں ہنگامہ کرنے والے 2 بی جے پی کارکنان گرفتار

بی جے پی کارکنان نے ریستوراں کے مالک کو فرقہ وارانہ ہم آہنگی بگاڑنے کا الزام لگا کر مرکزی وزیرداخلہ امت شاہ کے نجی اسسٹنٹ کو فون کرنے کی دھمکی دی۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

چنئی: شراب کے نشے میں مدہوش ہوکر یہاں کے ایک ریستوراں میں ہنگامہ کرنے کے الزام میں پولیس نے بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی) کے دوکارکنان کو گرفتار کیا ہے۔ پولیس نے بتایا کہ تین لوگ آئس ہاوس تھانہ علاقہ کے رویا پٹاہ واقع ایک ریستوران میں کل دیرشب گئے اور کھانے کا آرڈر کیا۔

پولیس نے بتایا کہ جس وقت یہ لوگ پہنچے اس وقت ریستوراں بند ہو رہا تھا اور اس کے مالک ابوبکر نے کہا کہ دوکان بند ہے۔ اس کے بعد نشے میں مدہوش تین لوگوں نے جھگڑا شروع کر دیا۔ اسے دیکھ کر ریستوراں کے مالک نے کھانا بنوایا اور انہیں دیا۔ کھانا کھانے کے بعد ان لوگوں نے پیسہ دینے سے انکار کر دیا اور ریستوراں کے مالک کو پیسہ مانگنے کے لئے دھمکیاں دیں۔

انہوں نے ریستوراں کے مالک کو فرقہ وارانہ ہم آہنگی بگاڑنے کا الزام لگا کر مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کے نجی اسسٹنٹ کو فون کرنے کی دھمکی بھی دی۔ بی جے پی کارکنان کے ہنگانے کا ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگیا ہے۔ ہوٹل کے مالک کی شکایت پر پولیس نے ملزمان کے خلاف شکایت درج کرکے بھاسکرم (30) اور پروشوتم (32) کو آج گرفتار کرلیا جبکہ تیسرے ملزم کی تلاش جاری ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next