کورونا کا قہر جاری، سپریم کورٹ کے 13 جج اور تقریباً 400 ملازمین پازیٹو پائے گئے

جسٹس این وی رمنا نے منگل کے روز سماعت کے دوران عدالت میں کورونا کے مضر اثرات کے بارے میں جانکاری دیتے ہوئے بتایا کہ سپریم کورٹ کے 13 جج اور 400 عملہ کووڈ-19 سے متاثر ہے۔

سپریم کورٹ، تصویر یو این آئی
سپریم کورٹ، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: سپریم کورٹ کے 13 جج اور یہاں رجسٹری کے 400 ملازمین کووڈ-19 کی تیسری لہر کی زد میں آئے ہیں۔ چیف جسٹس این۔ وی رمنا نے خود منگل کو سماعت کے دوران عدالت میں کورونا کے مضر اثرات کے بارے میں یہ اطلاعات شیئر کیں۔ سماعت کے دوران ایک وکیل نے بنچ کے سامنے شکایت کی کہ ان کا کیس فوری سماعت کے لیے سپریم کورٹ رجسٹری میں درج نہیں ہے۔

اس پر چیف جسٹس نے وکیل سے کہا کہ عدالت کے 13 جج کے ساتھ ساتھ رجسٹری کا 400 عملہ کووڈ۔ 19 سے متاثر ہے، اگر آپ کو مسائل کا علم نہیں تو ہم کیا کر سکتے ہیں۔ جسٹس رمن نے مزید بتایا کہ "ہمارے ادارے تعاون نہیں کر رہے پھر بھی ہم کام کر رہے ہیں۔ براہ کرم اسے سمجھنے کی کوشش کریں۔"

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔