شب برات پر مسلمانوں نے گھروں میں رہ کر کی عبادت ، علمائے کرام کی اپیل کا اثر

علمائے کرام اور دانشوروں نے مسلمانوں اور مسلم نوجوانوں سے اپیل کی تھی کہ شب برات کے موقع پر وہ قبرستانوں اور درگاہوں پر نہ جائیں اس کے مثبت نتائج سامنے آئے

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا
user

یو این آئی

خبروں کے مطابق کورونا وائرس بیماری اور ملک میں جاری لاک ڈاؤن کے دوران پورےملک میں شب برات پر مسلمانوں نے گھروں میں رہ کر عبادت کی اور لاک ڈاؤن کا پورا احترام کیا۔ عروس البلاد ممبئی کے قبرستانوں اور درگاہوں میں بہت کم لوگوں کی حاضری دیکھی گئی بلکہ یوں کہا جا سکتا ہے کہ سو فیصد مسلمانوں نے اپنے گھروں میں بیٹھ کر عبادت الہی کی-

علمائے کرام اور دانشوروں نے مسلمانوں اور مسلم نوجوانوں سے اپیل کی تھی کہ شب برات کے موقع پر وہ قبرستانوں اور درگاہوں پر نہ جائیں اس کے مثبت نتائج سامنے آئے اور مغرب کے بعد مسلم علاقوں میں ایکدم سے سناٹا چھایا ہوا تھا اور پولیس کا گشت جاری تھا-

لاک ڈاؤن میں بھی عام طور سے رات دیر گئے تک مسلم علاقوں میں چند نوجوانوں کو سڑکوں پر گھومتے یا موٹر سائیکل دوڑاتے ہوئے دیکھا جاتا تھا لیکن آج تو ایک عجیب عالم تھا سڑکوں پر گاڑیاں ہی نہیں تھیں اور پورا سناٹا چھایا ہوا تھا - ممبئی پولیس نے مرین لائن قبرستان اور ناریل واڑی قبرستان میں سخت پولیس بندوبست نافذ کیا تھا یہاں تک کہ ان قبرستانوں میں آنے والی سڑکوں کو بھی سیل کر دیا گیا تھا -

مسلم علاقوں میں اور محلوں میں کل سے ہی پولیس کا گشت بڑھا دیا گیا تھا یہاں تک کہ ناگپاڑہ علاقہ کی میڈیکل کی دوکانوں کو بھی مقامی پولیس اسٹیشن کے سینئر انسپکٹر شالنی شرما کے حکم کے تحت بند کر دیا گیا تھا بعد میں دوا فروشوں نے جا کر سینئر انسپکٹر سے ملاقات کی اور ان کی مداخلت کے بعد آج کیمسٹ شاپ کھلے نظر آئی۔

مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ لاک ڈاون کے دوران جن لوگوں کو پولیس روکتی ہے وہ یہ جواز پیش کرتے ہیں کہ دوا لینے جانا ہے اور ان کے ہاتھوں میں ایک سال پرانی یا چند ماہ ڈاکٹروں کی تشخیص کردہ دواؤں کی پرچی ہوا کرتی تھی جو ایک طرح سے لاک ڈاون میں دوائی کا بہانہ بنا کر اپنا مطلب پورا کر لیتے تھے ۔

ممبئی پولیس کمشنر پرم ویر سنگھ نے بھی مسلمانوں سے اپیل کی تھی کہ وہ شب برات کے موقع پر اپنے گھروں میں عبادت کریں۔ مسلم تنظیمیں جمیعتہ العلماء، رضا اکیڈمی، جامعہ قادریہ اشرفیہ، آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ سمیت ممبئی کی مختلف ملی تنظیموں نے مسلمانوں سے اپیل کی تھی کہ وہ کورونا وائرس کے خاتمہ کیلئے اور موجودہ حالات کے پیش نظر گھر میں ہی بیٹھ کر عبادت کریں ۔

ممبئی کے جے جے اسپتال ناکہ، ناگپاڑہ جنکشن، دو ٹانکی جنکشن، ماہم میں واقع حضرت مخدوم شاہ رحمتہ اللہ علیہ کی درگاہ، میٹرو سنیما کے قریب واقع بابا بہاوالدین شاہ بابا کی درگاہ، حاجی علی درگاہ اور دیگر اہم مقامات پر پولیس نے سخت بندوبست کر رکھا تھا اور کسی بھی شخص کو سڑکوں پر گھومنے کی اجازت نہیں تھی۔ آج دوپہر ناریل واڑی قبرستان میں کورونا وائرس کی بیماری میں مبتلامدنپورہ نامی علاقہ کے ایک شخص کی تدفین عمل میں آئی جس کے دوران پولیس نے سخت بندوبست کر رکھا تھا۔

next