شہرنامہ

لکھنؤ: آسمانی بجلی گرنے سے بڑے امام باڑہ کی برجی کو نقصان

جمعہ کے روز اترپردیش کے کئی شہروں میں آسمانی بجلی گرنے کے واقعات رونما ہوئے، راجدھانی لکھنؤ واقع بڑا امام باڑہ بھی آسمانی بجلی کی زد میں آ گیا اور عمارت کے پچھلے حصہ کو نقصان پہنچا۔

تصویر بشکریہ ٹوئٹر/@yusrahusainTOI<a href="https://twitter.com/yusrahusainTOI/status/1005037322985828352"></a>
تصویر بشکریہ ٹوئٹر/@yusrahusainTOI<a href="https://twitter.com/yusrahusainTOI/status/1005037322985828352"></a>

قومی آوازبیورو

شمالی ہندوستان کی کئی ریاستوں کے ساتھ اترپردیش کے مختلف علاقوں میں جمعہ کے روز آسمانی بجلی گرنے کے واقعات پیش آئے۔ ایک طرف جہاں صوبہ بھر میں بجلی گرنے سے کئی اموات واقع ہوئیں وہیں دوسری طرف لکھنؤ واقع 230 سال پرانا بڑا امام باڑہ بھی اس کی زد میں آ گیا۔

ٹائمس آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق آسمانی بجلی نے عمارت کے پچھلے حصہ کو اپنی زد میں لیا جس کے سبب ایک حصہ کو نقصان پہنچا۔ اس واقعہ میں دو افراد زخمی ہوئے جنہیں علاج کے لئے ٹراما سینٹر لے جایا گیا۔

تصویر بشکریہ ٹوئٹر/@yusrahusainTOI
تصویر بشکریہ ٹوئٹر/@yusrahusainTOI

ضلع انتظامیہ نے بتایا کہ آسمانی بجلی گرنے سے نوابی دور کی اس اہم عمارت کو نقصان پہنچا ہے۔ اس حادثہ میں 13 سالہ یاسمین کے پیر میں فریکچر آ گیا اور 18 سالہ سراج کے سر میں چوٹ آئی ہے۔ دونوں کو خطرے سے باہر بتایا جا رہا ہے۔

تصویر بشکریہ ٹوئٹر/@yusrahusainTOI
تصویر بشکریہ ٹوئٹر/@yusrahusainTOI

واضح رہے کہ بڑا امام باڑا اودھ کے چوتھے نواب آصف الدولہ نے تعمیر کرایا تھا۔ یہ عمارت 1786 سے 1791 کے بیچ تعمیر ہوئی۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ (ویسٹ) سنتوش کمار نے کہا کہ اس عمارت کے نقصان زدہ حصے کی مرمت کرانے کے لئے اے ایس آئی یعنی محکمہ آثار قدیمہ کو کہا جائے گا۔ بڑا امام باڑہ کو اے ایس آئی نے محفوظ عمارت قرار دیا ہے۔